1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جرمن دارالحکومت میں اوباما کا شاندار استقبال

جرمن دارالحکومت برلن پہنچنے پر سابق امریکی صدر باراک اوباما کا ایسا استقبال کیا گیا، جیسے کسی پاپ اسٹار کا کیا جاتا ہے۔ وہ مسیحیت میں اصلاحات کے پانچ سو سال مکمل ہونے پر منعقدہ ایک اجلاس میں شرکت کے لیے جرمنی پہنچے ہیں۔

سابق امریکی صدر باراک اوباما نے مسیحی مسلک پروٹیسٹنٹ کے ’چرچ ڈے‘ کے موقع پر ہونے والے اجلاس سے خطاب کے دوران نسل پرستی، قوم پرستی اور غیر جمہوری رجحانات کی یلغار کے خلاف اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ ان کے بقول، ’’اُن اقدار کا تحفظ کرنا سب سے زیادہ ضروری ہے، جو ہمارے لیے اہم ترین ہیں‘‘۔ برلن کے مشہور برانڈنبرگ دروازے کے سامنے ہونے والے اس اجلاس میں چانسلر انگیلا میرکل نے بھی شرکت کی۔

 چانسلر میرکل اور اوباما نے اپنی بات چیت کے دوران کہا کہ قانون کی حکمرانی، انسانی وقار،آزادی اظہار، آزادی مذہب اور عالمی معیشت جیسے اصولوں کا لازماً دفاع کیا جانا چاہیے۔ ستر ہزار کے قریب لوگوں نے ان دونوں رہنماؤں کے خیالات سنے۔ جرمنی میں پروٹیسنٹ چرچ ڈے کی تقریبات اتوار تک برلن اور وِٹن برگ میں جاری رہیں گی۔ اپنے آٹھ سالہ دورِ صدارت میں اوباما نے جرمنی کا کم از کم چھ مرتبہ دورہ کیا تھا۔

میرکل اس تقریب میں شرکت کے بعد برسلز روانہ ہو گئی ہیں، جہاں وہ مغربی دفاعی اتحاد نیٹو کے سربرہی اجلاس میں شریک ہیں۔ اجلاس کے موقع پر برلن میں انتہائی سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے تھے۔

ملتے جلتے مندرجات