1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جرمن انجینئر طالبان کی قید سے رہا

وَسط جولائی میں افغانستان میں اغوا کئے گئے 62 سالہ جرمن سول انجینئر کو رہا کر دیا گیا ہے اور وہ جلد واپس جرمنی پہنچنے والے ہیں۔ جرمن وزیر خارجہ فرانک والٹر شٹائن مائر نے اِس خبر پر خوشی اور اطمینان کا اظہار کیا ہے۔ افغان حکومت کے سرکاری بیانات اور طالبان ملیشیا کی اطلاعات کے مطابق جرمن انجینئر اور اُس کے چار ساتھی افغان باشندوں کوجیل سے پانچ طالبان قیدیوں کی رہائی کے بدلے میں آزاد کیا گیا ہے۔

رہا ہونے والا جرمن انجینئر Rudolf Blechschmidt

رہا ہونے والا جرمن انجینئر Rudolf Blechschmidt

اغوا کنندگان نے بارہا افغانستان سے جرمن دَستے واپس نہ بلائے جانے کی صورت میں اِن یرغمالیوں کو ہلاک کرنے کی دھمکی دی تھی۔ طالبان نے اِس جرمن انجینئر اور اُس کے ساتھیوں کو 18 جولائی کو جنوبی افغان صوبے وَردک سے اغوا کیا تھا۔ اُس کے ساتھی جرمن انجینئر کو طالبان نے گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا۔