1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جرمنی میں ہم جنس پرستوں کی بڑی پریڈ

کولون شہر میں منعقدہ اس پریڈ میں LGBT برادری سے تعلق رکھنے والے افراد کے علاوہ وہ لوگ اور تنظیمیں بھی شریک ہیں، جو ہم جنس پرستوں کے لیے مساوی حقوق کی حمایت کرتی ہیں۔

کولون شہر میں یہ اجتماع کرسٹوفر اسٹریٹ پر منعقد ہو رہا ہے اور منتظمین کے مطابق اس پریڈ میں ہزاروں شرکاء کے علاوہ سڑک کے دونوں اطراف موجود تماشائیوں کی تعداد بھی قریب ساڑھے نو لاکھ ہو گی، جن کا تعلق جرمنی اور یورپ بھر سے ہے۔

جرمنی میں حال ہی میں ایوان زیریں نے ہم جنس پرستوں کو قانونی طور پر شادی کی اجازت کا قانون منظور کیا تھا، جس کی توثیق جمعے کو جرمن ایوان بالا نے کر دی۔ اس قانون کے بعد جرمنی ان یورپی ممالک میں شامل ہو گیا ہے، جہاں شادی کے لیے جنسی رجحان اور میلان کی شرط کا خاتمہ ہو گیا ہے۔ اسی تناظر میں اتوار کو اس پریڈ میں شریک افراد جشن بھی منا رہے ہیں۔

Bildergalerie Christopher Street Day Köln 2013 CSD Cologne Pride (DW/C. Nehring)

ہم جنس پرستوں کی شادی کی اجازت بھی دے دی گئی ہے

اس پریڈ میں شریک افراد نعروں سے سجائی گئی 85 گاڑیوں کے ہم راہ شہر کے مختلف حصوں میں مارچ کریں گے۔ اس مارچ کے آغاز پر منتظمین کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اب تک اس پریڈ کا ماحول انتہائی شان دار اور جشن سے بھرپور ہے۔

اس بار اس پریڈ کا بنیادی نعرہ ’دوبارہ نہیں‘ رکھا گیا ہے، جو جرمنی میں نازی دور حکومت میں ہم جنس پرستوں پر ہونے والے مظالم اور ان کے قتل عام کے تناظر میں ہے۔

گزشتہ روز یورپی ملک ایسٹونیا میں بھی سینکڑوں افراد نے ایسی ہی ایک پریڈ میں حصہ لیا تھا۔ ایسٹونیا کے درالحکومت میں ہم جنس پرستوں پر ایک حملے کے بعد قریب ایک دہائی تک وہاں گے پریڈ نہیں ہو پائی تھی۔ منتظمین کے مطابق اس پریڈ میں قریب 18 سو افراد نے شرکت کی، جب کہ ان کے خلاف ہونے والے مظاہرے میں محض چند افراد ہی شریک ہوئے۔