1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جرمنی میں نئی مخلوط حکومت کا قیام کل بدھ کو

جرمنی کی اگلی سنٹر رائٹ مخلوط حکومت کے قیام کے سلسلے میں اب زیادہ دیر نہیں رہ گئی ہے۔ تینوں جماعتوں کی جانب سے معاہدے کی توثیق کے بعد پارٹی لیڈران نے بھی اِس سمجھوتےکی دستاویز پر دستخط کر دیئے ہیں۔

default

جرمنی میں نئی مخلوط حکومت کے قیام کے سمجھوتے کے دستخط کی تقریب میں شریک حلیف جماعتوں کے لیڈران

پارٹی سیشنوں میں منظوری کے بعد معاہدے کی دستاویزات پر دستخط کی تقریب گزشتہ شام منعقد ہوئی جس میں کرسچیئن ڈیموکریٹک یونین، فری ڈیموکریٹک پارٹی اور کرسچیئن سوشل یونین کے لیڈروں نے دستخط کئے۔ سی ڈی یو کی جانب سے دستخط کرنے کے بعد چانسلر انگیلا میرکل کا کہنا تھا کہ اُن کی پارٹی جرمنی کو اقتصادی مشکلات سے نکالنے کے لئے حلیف جماعت ایف ڈی پی کے ساتھ مل کر کام کرے گی اور اِسکے لئے اقتصادی ترقی کے راستے کو منتخب کیا گیا ہے۔ مخلوط حکومت کے قیام کے سلسلے میں ہونے والے مذاکرات کے تناظر میں انگیلا میرکل کہتی ہیں کہ اِس مخلوط حکومت کے قیام کے لئے بہت سوچ بچار کی گئی ہے اوراِس دوران تھوڑی سے مشکلات کا بھی سامنا رہا۔

Unterzeichnung des schwarz-gelben Koalitionsvertrags Flash-Galerie

دستخط کی تقریب کے بعد تینوں لیڈران کا کامیابی کا اظہار

فری ڈیموکریٹک پارٹی نے اگلی مرکزی حکومت کے سلسلے میں طے پانے والے سمجھوتے کی توثیق اتوار کو اپنی پارٹی کانگریس میں کی تھی۔ اِس جماعت کے چیر مین اور نئی حکومت میں ڈپٹی چانسلر اور وزیر خارجہ کا منصب سنبھالنے والے گیڈو ویسر ویلے کا کہنا تھا کہ یہ مخلوط حکومت مشترکہ اقدار پر مبنی ہے، آنے والے دنوں میں مقصد بھی ایک ہے اور یہ سمجھوتا اُن کے ملک کو زیادہ آزادی فراہم کرے گا۔ آزادی سے مراد ذمہ داری ہے۔

نئی مخلوط حکومت میں شریک صوبہ باویریا کی سیاسی جماعت کرسچیئن سوشل یونین نے پیر کے روز بڑی سیاسی جماعت سی ڈی یو اور ایف ڈی پی کے ساتھ طے پانے والے معاہدے کی پارٹی سطح پر اجتماعی منظوری دی تھی۔ کرسچیئن سوشل یونین کے سربراہ ہورسٹ زی ہوفر نے بھی معاہدے کو جرمنی کے لئے انتہائی اہم قرار دیا۔ زی ہوفر کا کہنا تھا کہ اُنہوں نے نے اگلے چار سالوں کے لئے ایک اچھی بنیاد تیار کر لی ہے اور اب یہ سیاسی لیڈروں پر منحصر ہے کہ اگلے سالوں میں کس طرح اِس کو عملی روپ دیتے ہیں۔

اس معاہدے کے بعد اب کل بدھ کو جرمن پارلیمنٹ میں انگیلا میرکل کو دوسری مدت کے لئے چانسلر نامزد کردیا جائے گا۔ کل ہی چانسلر اور اُن کی نئی کابینہ حلف اٹھا لے گی۔ اس طرح نئی مخلوط حکومت سابقہ سی ڈی یو اور ایس ڈی پی کی گرینڈ مخلوط حکومت کی جگہ معرضِ وجود میں آ جائے گی۔ نئی مخلوط حکومت کے سمجھوتے میں ٹیکسوں کی مد میں کٹوتی، لازمی فوجی سروس میں کمی اور صحت عامہ کے بنیادی ڈھانچے میں تبدیلی پیدا کرنا نمایاں ہے۔