1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جرمنی: مسلح نوجوان کا اسکول پر حملہ، 10 افراد زخمی

جرمنی کے جنوبی شہر نیورین برگ کے نواح میں ایک سیکنڈری اسکول میں جمعرات کی صبح ایک 19 سالہ مسلح نوجوان نے حملہ کر کے دس کے قریب اساتذہ اور طالب علموں کو زخمی کر دیا۔ زخمیوں میں سے تین کی حالت نازک بتائی گئی ہے۔

default

پولیس کے ایک ترجمان کے مطابق جنوبی صوبے باویریا میں نیورین بیرگ کے نواح میں چھوٹے سے شہر انسباخ کے اس اسکول کا ایک سابقہ طالب علم صبح آٹھ اور نو بجے کے درمیان اچانک اس تعلیمی ادارے میں داخل ہوا۔ یہ نوجوان ایک کلہاڑی، چند پٹرول بموں اور کچھ دیگر چھوٹے ہتھیاروں سے لیس تھا۔ اس نے اسکول میں داخل ہوتے ہی وہاں موجود طلبہ و طالبات اور اساتذہ پر حملہ کر دیا۔

Ansbach Amoklauf

پولیس اہلکاروں نے اسکول کی عمارت کا حصار کیا ہوا ہے

پولیس کو فوری طور پر حملے کی اطلاع کر دی گئی جس نے وہاں پہنچ کر دس منٹ کے اندر اندر ملزم کو گرفتار کرلیا۔ تب تک یہ جنونی نوجوان دس افراد کو زخمی کرچکا تھا۔ ان زخمیوں کو علاج کے لئے بلاتاخیر ایک قریبی ہسپتال پہنچا دیا گیا۔ پولیس کے مطابق گرفتاری کے دوران مزاحمت کرنے پر یہ نوجوان خود بھی زخمی ہو گیا تھا اور اس وقت وہ بھی ہسپتال میں زیر علاج ہے۔ پولیس اس حملے کے محرکات کا تعین کرنے کی کوششوں میں ہے۔

میڈیا رپورٹوں کے مطابق اس حملے میں مبینہ طور پر ایک سے زائد افراد شامل تھے۔ تاہم پولیس حکام نے ایسی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ اسکول کی پوری عمارت کی تلاشی لی گئی جس دوران وہاں سے کوئی دوسرا مشتبہ شخص نہیں ملا۔ اس اسکول میں زیر تعلیم طلبہ و طالبات کی تعداد سات سو کے قریب بنتی ہے۔

جمعرات کو پیش آنے والے اس واقعے سے قریب چھ ماہ قبل جرمنی میں اسی سال مارچ کے مہینے میں ٹم کریچمر نامی ایک اور جنونی نوجوان نے بھی آتشیں ہتھیاروں سے مسلح ہو ایک تعلیمی ادارے میں طالب علموں اور ساتذہ پر حملہ کر دیا تھا۔ اس حملے میں وننڈن نامی چھوٹے سے شہر اور اس کے نواح میں سترہ سالہ ملزم کے ہاتھوں کل پندرہ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

رپورٹ: انعام حسن

ادارت: مقبول ملک