1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جاپان میں ایک مرتبہ پھرزلزلہ، سونامی کی وارننگ

11 مارچ کے تباہ کن زلزلے کے ٹھیک ایک ماہ بعد جاپان میں ایک مرتبہ پھر آج 7.1 شدت کے زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے ہیں۔ اس تازہ زلزلے کے بعد سونامی وارننگ بھی جاری کی گئی ہے۔

default

جاپانی حکام نے آج پیر 11 اپریل کو متاثرہ فوکوشیما جوہری پاور پلانٹ سے خارج ہونے والی تابکاری میں اضافے کی وجہ سے اس کے گرد حفاظتی انخلائی دائرہ بھی بڑھا دیا ہے۔ زلزلے اور سونامی سے متاثرہ فوکوشیما جوہری پاورپلانٹ کے حوالے سے دنیا کو چرنوبل ایٹمی حادثے کے بعد سے خطرناک ترین صورتحال درپیش ہے۔

تازہ ترین زلزلے کے جھٹکوں سے جاپانی دارالحکومت ٹوکیو سمیت ملک کے مشرقی علاقوں میں عمارتیں لرز اٹھیں۔ اس زلزلے کی شدت ریکٹر اسکیل پر 7.1 ریکارڈ کی گئی۔ سرکاری ٹیلی وژن NHK کے مطابق تازہ تازہ جھٹکوں سے فوکوشیما پاور پلانٹ کو بجلی کی فراہمی متاثر ہوئی اور اس کے دو متاثرہ ری ایکٹرز کو بند کرنا پڑا۔

Japan Atomreaktor Fukushima Rettungsaktionen Flash-Galerie

فوکوشیما جوہری پاورپلانٹ کے حوالے سے دنیا کو چرنوبل ایٹمی حادثے کے بعد سے خطرناک ترین صورتحال درپیش ہے

فوکوشیما جوہری پاور پلانٹ کو چلانے والی کمپنی ٹوکیو الیکٹرک پاور کمپنی (TEPCO) کے مطابق ہنگامی کاموں میں مصروف عملے نے ری ایکٹرز نمبر ایک، دو اور تین کو ٹھنڈا کرنے کے لیے ان پر پانی ڈالنے کا کام روک دیا ہے۔

جاپان کے چیف کیبنٹ سیکرٹری یوکیو ایڈانو نے کہا ہے کہ فوکوشیما جوہری پلانٹ کے ارد گرد 20 کلومیٹر تک کے انخلائی زون کے باہر بھی ایسے مقامات کو خالی کرالیا جائے گا جہاں تابکاری کی مقدار زیادہ پائی گئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بچوں، حاملہ خواتین اور ہسپتالوں میں موجود مریضوں کو فوکوشیما نیوکلیئر کمپلکس سے 20 تا 30 کلومیٹر تک دور رکھا جائے۔ ایڈانو کے بقول یہ فیصلہ تابکاری سے متعلق ڈیٹا کے تجزیے کے بعد کیا گیا ہے۔

رپورٹ: افسراعوان

ادارت: کِشور مُصطفیٰ

DW.COM

ویب لنکس