1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جاپان، معاشی سست روی کے باوجود دنیا کی دوسری بڑی معیشت

جاپان نے گزشتہ سہ ماہی کے دوران اقتصادی ترقی میں سست روی کے باوجود دنیا کی دوسری بڑی معیشت کا اعزاز برقرار رکھا۔ حکومتی اعدادوشمار کے مطابق اس عرصے میں مجموعی قومی پیداوار میں 0.1 فیصد اضافہ ہوا جو تخمینوں سے کم ہے۔

default

دوسری طرف جرمنی اور امریکہ نے اسی سہ ماہی کے دوران قومی مجموعی پیداوار میں نمایاں ترقی کے واضح اشارے دئے ہیں۔ جرمن حکام کے مطابق ان کی اقتصادی ترقی میں اضافے کی شرح 2.2 فیصد رہی جبکہ امریکہ کی ترقی کی رفتار 2.4 فیصد ریکارڈ کی گئی ہے۔

جاپانی حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے تازہ اعداد و شمار کے بعد نکئی225 انڈیکس میں بھی مندی ریکارڈ کی گئی ہے۔ جاپان کی موجودہ اقتصادی ترقی کی رفتار سے وزیر اعظم Naoto Kan کی حکومت کو بھی خطرات لاحق ہو گئے ہیں۔ جون کے دوران جاپان میں بے روزگاری کی شرح میں 5.3 فیصد کی رفتار سے اضافہ ہوا تھا جبکہ آٹو موبل اور الیکٹرانک آلات کی برآمدات میں بھی کمی دیکھنے میں آئی تھی۔

Naoto Kan Flash-Galerie

جاپانی وزیر اعظم ناؤتو کان

عالمی بینک کے اعدادوشمار کے مطابق اس صدی کے پہلے آٹھ سالوں کے دوران جاپان کی اقتصادی ترقی کی شرح پانچ فیصد رہی جبکہ اسی دوران چین نے 261 فیصد کی شرح سے ترقی کی۔

ماہرین کے مطابق جاپانی کرنسی ین کی قدر میں اضافے سے برآمدات متاثر ہو رہی ہیں۔ گزشتہ ہفتے کے دوران جاپانی ین نے امریکی ڈالر کے مقابلے میں اپنی قدر میں ریکارڈ اضافہ کیا، جس سے برآمدی منڈی سے جڑے کاروباری برادری کی پریشانیوں میں مزید اضافہ ہوا ہے۔

ان اعداد و شمار کے جاری ہونے کے بعد وزیر خزانہ Satoshi Arai نے حکومت کو مشورہ دیا ہے کہ ین کی بڑھتی ہوئی قدر کو کنٹرول کرنے کے لئے اقدامات کئے جائیں۔ اقتصادی ماہرین کے مطابق جاپانی حکومت کو چاہئے کہ وہ دیگر اہم کرنسیوں کے مقابلے میں ین کی قدر میں استحکام پیدا کرے۔ جاپان کی موجودہ اقتصادی ترقی کی رفتار کو دیکھتےہوئے یہ قیاس آرائیاں بھی شروع ہو گئی ہیں کہ چین جلد ہی جاپان کی جگہ دنیا کی دوسری بڑی معیشت بن جائے گا۔

رپورٹ : عاطف بلوچ

ادارت : شادی خان سیف

DW.COM