1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جاپان: تابکار پانی کے سمندر میں بہنے کے عمل کو روک دیا گیا، ٹیپکو

جاپان میں زلزلے اور سونامی سے متاثرہ فوکوشیما کے جوہری پلانٹ کی آپریٹر ٹوکیو الیکٹرک پاور کمپنی نے اعلان کیا ہے کہ جوہری پلانٹ سے تابکار مواد سے لیس پانی کے بحر الکاہل میں بہنے کے عمل کو روک دیا گیا ہے۔

default

پانی کے بہاؤ کو روکنے کی تصدیق پلانٹ پر کام میں مصروف عملے کی جانب سے علی الصبح کی گئی ہے۔ گزشتہ روز اس ریڈیو ایکٹو پانی کے بہاؤ کو روکنے کے لیے سوڈیم سلیکیٹ کا استعمال کیا گیا تھا۔ اس کیمیاوی مرکب کو واٹر گلاس بھی کہا جاتا ہے۔ جوہری پلانٹ کے ری ایکٹر نمبر دو کی دیوار کے اندر پیدا ہونے والے شگاف کو بند کرنے کے بعد ہی تابکار پانی کے مسلسل بہاؤ کوروکا گیا ہے۔

NO FLASH Japan auf der Suche nach Vermissten Angehörigen nach Erbeben Atomkatastrophe

جاپان دوسری جنگِ عظیم کے بعد اپنی تاریخ کے سب سے بدترین بحران سے دو چار ہے

اس کے باوجود ٹیپکو کو آلودہ پانی کو سمندر میں پھینکنا پڑے گا کیوں کہ اس کے پاس اس کو ذخیرہ کرنے کی جگہ نہیں ہے۔ یہ آلودہ پانی انتہائی کم تابکاری مواد کا حامل بتایا گیا ہے۔

جاپان دوسری جنگِ عظیم کے بعد اپنی تاریخ کے سب سے بدترین بحران سے دو چار ہے۔ جاپان میں گیارہ مارچ کو آنے والے تباہ کن زلزلے اور پھر سونامی کے بعد سے حکومت ابھی تک فوکو شیما کے ایٹمی ری ایکٹروں کی وجہ سے پیدا ہونے والے بحران پر قابو نہیں پا سکی۔ اب ٹوکیو حکومت نے یہ کہا ہے کہ وہ سمندر میں تابکاری اثرات کی موجودگی سے متعلق زیر معائنہ علاقے کا رقبہ بڑھانے کا ارادہ رکھتی ہے۔

اسی دوران فوکوشیما ایٹمی بجلی گھر کی منتظم ٹوکیو الیکٹرک پاور کمپنی ٹیپکو کے شیئرز کی قیمتوں میں نئی ریکارڈ کمی دیکھنے میں آئی ہے۔ منگل کو یہ قیمت صرف 362 ین فی شیئر کی حد تک گر گئی۔ اس طرح گیارہ مارچ کے بعد سے سٹاک مارکیٹ میں اس کمپنی کی مجموعی مالیت میں 80 فیصد سے زائد کی کمی آ چکی ہے۔

ٹیپکو نے جوہری تابکاری سے متاثر ہونے والے افراد کو معاوضہ دینے کا بھی اعلان کیا ہے۔

رپورٹ: شامل شمس⁄ خبر راسں ادارے

ادارت: عابد حسین

DW.COM