1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جاپان: ايٹمی تباہی کا خطرہ نہيں ٹلا ہے

جمعہ کو جاپان ميں آنے والے تباہ کن زلزلے اور سونامی کے نتيجے ميں متاثر ہونے والے نیو کلیئر پاور پلانٹ ميں ايٹمی تباہی کا خطرہ پہلے کی طرح اب بھی سر پر منڈلا رہا ہے۔ کئی ری ايکٹروں ميں دھماکوں کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

default

فوکو شيما ايٹمی پاور پلانٹ

جاپانی حکوت نے آج پہلی بار عوام کو خبردار کيا کہ متاثرہ ری ايکٹروں سے خارج ہونے والی تابکار شعاعوں سے ان کی صحت کو نقصان پہنچنے کا خطرہ ہے کيونکہ خارج ہونے والی تابکاری ميں خطرناک حد تک اضافہ ہو گيا ہے۔

وزير اعظم ناؤتو کان نے ٹيلی وژن پر نشر ہونے والی اپنی تقرير ميں کہا کہ ايٹمی بجلی گھر فُوکو شِيما کےگرد و پيش ميں تابکاری کی مقدارغير مضر حد سے بہت زيادہ بڑھ چکی ہے: ’’ری ايکٹر نمبر ايک اور تين ميں ہائیڈروجن کے دھماکے ہوئے ہيں اور ری ايکٹر نمبر چار ميں بھی آگ لگ گئی ہے۔ اب متاثرہ علاقے ميں تابکاری کی سطح بہت زيادہ بڑھ چکی ہے۔ تابکاری کے دوسرے راستوں سے نکلنے کا بھی خطرہ ہے۔ اس لیے ميں اپيل کرتا ہوں کہ ايٹمی پاور پلانٹ فُوکو شِيما کے ارد گرد رہنے والے تمام لوگ پہلے ہی سے خالی کرائے جانے والے 20 کلو ميٹر کے زون کے باہر کے علاقوں سے بھی نکل جائيں۔‘‘

Japan Premierminister Naoto Kan Erdbeben Tsunami Flash-Galerie

جاپانی وزير اعظم ناؤتوکان

فوکو شيما کے ايٹمی بجلی گھر کو چلانے والی فرم ٹوکيو اليکٹرک پاور کے ايک ترجمان نے کہا کہ اس فرم نے حکومت کو ہنگامی صورتحال سے باخبر کر ديا ہے اور يہ بتا ديا ہے کہ انتہائی تباہ کن نتائج کے حامل جوہری پگھلاؤ کو خارج از امکان قرار نہيں ديا جا سکتا۔ يہ بھی کہا گيا ہے کہ بلاک نمبر دو ميں ہونے والے دھماکے سے شايد ری ايکٹر کے مرکزی حصے کے ارد گرد حفاظتی خول کے نچلے حصے کو نقصان پہنچا ہے ليکن خود ری ايکٹر کے جوہری مرکز کو نقصان نہيں پہنچا۔

ٹوکيو ميں بھی تابکاری ميں اضافہ ريکارڈ کيا گيا ہے اور بہت سے شہری آج صبح سويرے ہی دور جنوب کی طرف روانہ ہو چکے ہيں۔

Flash-Galerie Japan Erdbeben Tsunami

جاپانی دفاعی عملہ تابکاری سے حفاظت کرنے والے لباس ميں

ابھی تک ہوا ايٹمی ری ايکٹروں سے خارج ہونے والے انتہائی مہلک تابکار مادے کو سمندر کی جانب دھکيل رہی ہے ليکن ہوا کا رخ کسی بھی وقت بدل سکتا ہے۔

زلزلے کی وجہ سے ایٹمی تنصیبات کو ٹھنڈا رکھنے کا نظام خراب ہو جانے کے بعد ٹوکيو سے 250 کلو ميٹر شمال مشرق کی طرف واقع فوکو شيما کے ايٹمی بجلی گھر کے چھ ميں سے چار ری ايکٹر اب حد سے زيادہ گرم ہو چکے ہيں۔

رپورٹ: بیرنٹ مُش بوروفسکا، سنگا پور / شہاب احمد صدیقی

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس