1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

جاپانی معیشت پر کساد بازاری کے سائے

عالمی مالیاتی بحران کا سامنا دنیا کی تمام بڑی معیشتوں کو ہے اوراب عام کارکنوں کی روز مرہ زندگی بھی متاثر ہونا شروع ہو گئی ہے۔ دنیا کی دوسری سب سے بڑی معیشت جاپان میں کارسازی کی صنعت بھی شدید طور پر متاثر ہوئی ہے۔

default

جاپانی معیشت تاریخی کساد بازاری کا شکار ہے

عالمی اقتصادی بحران کے باعث دنیا بھر میں جاپانی کاروں کی مانگ میں زبردست کمی ہوئی ہے اور ساتھ ہی ہائی ٹیک مصنوعات کی طلب بھی شدید متاثر ہوئی ہے۔ ٹوکیو میں سرکاری اعداد شمار کے مطابق جاپان سال رواں کے دوران عالمی جنگ کے بعد سے آج تک کی شدید کساد بازاری کا شکار رہے گا۔

Mitsubishi in Schaufenster in Japan

جاپانی کارساز صنعت بھی بری طرح متاثر ہوئی ہے

جاپان کے اقتصادی تحقیقی ادارے دائی ایچی ریسرچ انسٹیٹیوٹ کے ایک ماہر ہِدیو کمانو کہتے ہیں:’’ مالیاتی بحران کی خاص بات کساد بازاری میں مستقل اور مسلسل اضافہ ہے اس مالیاتی بحران کی گہرائی اور بھیلاؤ اتنا زیادہ ہے کہ یہ 2000میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں نظر آنے والے بحران سے بھی شدید ہو چکا ہے۔ کیونکہ نو برس قبل اس بحران سے صرف الیکٹرانک مصنوعات متاثر ہوئی تھیں۔‘‘

جاپانی وزیر اعظم تارو آسونے ٹوکیو میں پارلیمان سے اپنے خطاب کے دوران خبردار کیا ہے کہ ملکی معیشت کو پہنچنے والے نقصان کی تلافی کے لئے شاید تین برس سے بھی زائد کا عرصہ درکار ہو گا۔

ٹوکیو حکومت کے اعداد و شمار کے مطابق صنعتی پیداوار کی طلب میں مسلسل کمی کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ گزشتہ سال دسمبر میں جاپانی مصنوعات کی طلب میں کمی 9.8 فیصد تھی اور جنوری میں یہ مزید کم ہو کر دس فیصد تک جا پہنچی تھی۔

Fischereihafen in Japan

عالمی مالیاتی بحران سے جاپانی برآمدات کو زبردست دھچکا پہنچا ہے

کارسازی کی جاپانی صنعت کے مطابق طلب میں مستقل کمی کا یہ سلسلہ جاری ہے اور اسی سال جنوری میں جاپانی کاروں کی فروخت میں 41 فیصد کمی دیکھی گئی جو 1967 کے بعد سے سالانہ بنیادوں پر سب سے بڑی کمی ہے۔

امریکہ جاپانی کاروں کی ایک بڑی منڈی ہے اور جاپانی موٹر ساز اداروں کی ایسوسی ایشن کے اعداد وشمار کے مطابق امریکہ میں جاپانی کاروں کی مانگ میں 76.5 فیصد کمی آ چکی ہےجب کہ یورپ میں یہ کمی 63.2 فیصد بنتی ہے۔

Textilindustrie in China

جاپان میں ہزاروں ملازمین کے بے روزگار ہو جانے کے خدشات ہیں

جاپانی وزارت محنت نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ملکی صنعتوں پر مالیاتی بحران کے اثرات جاپان میں ایک لاکھ 60 ہزار غیر مستقل ملازمین کے بے روزگار ہو جانے کا باعث بن سکتے ہیں۔ اس وزارت کا یہ بھی کہنا ہے کہ رواں سال مارچ کے مہینے تک کئی کاروباری اداروں کو اپنے ملازمین کی تنخواہوں میں مجبورا کمی کرنے جیسا مسئلہ پیش آ سکتا ہے۔

جاپان میں جنوری میں بے روزگاری کی شرح بڑھ کر مجموعی طور پر 8.2 فیصد ہو چکی ہے۔

جاپانی وزیر محنت Yoichi Masuzoe نے پارلیمان میں اپنے خطاب میں کہا کہ ’’ یہ ایک سنگین مسئلہ ہے۔ ہمیں اپنی پوری کوشش کر کے ان افراد کی ملازمتوں کو بچانا ہو گا۔ ہمیں ملازمتوں کے نئے مواقع پیدا کرنا ہوں گے تاکہ کارکن بھی زندہ رہ سکیں۔‘‘