1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جارجیا میں سیاسی تناؤ میں مزید اضافہ

جارجیا میں گزشة ماہ سے جاری سیاسی تناؤ میں شدت آگئی ہے۔ جمعرات کے روزحزبِ اختلاف کےحامی مظاہرین اور پولیس حکام کے درمیان جھڑپوں میں درجنوں افراد زخمی ہوئے۔

default

جارجیا میں موجودہ سیاسی تناؤ میں اضافہ بدھ کےروز اس وقت ہونا شروع ہوا تھا

جارجیا میں جھڑپوں کا یہ سلسلہ اُس وقت شروع ہوا جب اپوزیشن مظاہرین صبح کے وقت دارالحکومت تبلیسی کی اہم ترین شاہراہ پرجمع ہونا شروع ہوئے اور صدر میخائل ساکاشویلی کے خلاف نعرے بازی کرنے لگے۔ اِس دوران پولیس اہلکاروں کو مظاہرین کو روکنے کے لئے طاقت استعمال کرنا پڑی۔ پولیس کے مطابق ان جھڑپوں میں 24 شہری اور 6 سیکیورٹی اہلکارزخمی ہوئے۔

Georgien Demonstrationen und Unruhe in Tiflis

حزبِ مخالف کے رہنماؤں نےپولیس حکام پر الزام لگایا ہے کہ اس نے بلا جوازپُرامن مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے ربر کی گولیاں چلائیں


حکام کے مطابق اِن جھڑپوں میں اُس وقت تیزی آئی جب مظاہرین نے ایک پولیس اسٹیشن کا گھیراؤ کرلیا اوراُس میں زبردستی داخل ہونے کی کوشش کی۔

دوسری جانب حزبِ مخالف کے رہنماؤں نےپولیس حکام پر الزام لگایا ہے کہ اس نے بلا جوازپُرامن مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے ربر کی گولیاں چلائیں اور لاٹھی چارج کیا،حالانکہ وہ محض اپنے تین زیِِرحراست ساتھیوں کی رہائی کا مطالبہ کر رہے تھے۔ ان اپوزیشن کارکنوں کو پولیس نے منگل کے روز گرفتار کیا تھا۔

Tschechien EU Georgien Präsident Michail Saakaschwili bei Vaclav Klaus

صدر ساکاشویلی کے خلاف عوامی ردعمل سن 2003 کےگلابی انقلاب کے بعد سے بڑھتا ہی گیا ہے

اسی دوران جارجیا کی وزارت داخلہ کےایک ترجمان نے بتایا کہ زیرحراست مظاہرین کو ملک میں قدامت پسند کلیسا کے اعلٰی نمائندوں کی ضمانت پر رہا کیا جا چکا ہے۔

جارجیا میں موجودہ سیاسی تناؤ میں اضافہ بدھ کےروز اس وقت ہونا شروع ہوا تھا جب نیٹو نےجارجیا میں اپنی فوجی مشقیں شروع کیں۔ ان مشقوں میںنیٹو کی رکن ریاستوں کے تقریباً 1100غیرملکی فوجی حصہ لے رہے ہیں۔

جارجیا میںمغربی دفاعی اتحاد کی یہ فوجی مشقیں اس لیئے متنازعہ ہوچکی ہیں کہ روس کو، جس نے گذشتہ سال اگست میں جارجیا کے ساتھ ایِک مختصرجنگ بھی لڑی تھی، ان فوجی مشقوں کے مقاصد پرشدید اعتراض ہے۔ روس نے ان مشقوں کی منصوبہ بندی اور پھر ان کے نظام اوقات کے اعلان کے بعد بھی مطالبہ کیا تھا کہ ان مشقوں کو منسوخ یا پھر ملتوی کیا جائے، لیکن نیٹو نے ماسکو کا یہ مطالبہ تسلیم نہ کیا اور یہ مشقیں پروگرام کے مطابق شروع ہوئی تھیں۔

جہاں تک جارجیا کے صدرکی مقبولیت کا سوال ہے تو صدر ساکاشویلی کے خلاف عوامی ردعمل سن 2003 کےگلابی انقلاب کے بعد سے بڑھتا ہی گیا ہے جب کہ ملکی اپوزیشن گذشتہ برس اگست میں روس کے ساتھ پانچ روزہ جنگ کے لئے بھی انہیں ہی مورود الزام ٹھہراتی ہے۔