1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

تھائی لینڈ اور کمبوڈیا کے درمیان جھڑپیں جاری

تھائی لینڈ اور کمبوڈیا کے درمیان تین روز سے جاری سرحدی جھڑپوں کے نتیجے میں کم از کم بارہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

default

کمبوڈیا کے فوجی گشت کرتے ہوئے

تھائی لینڈ اور کمبوڈیا کے درمیان سرحدی تنازعہ ایک مرتبہ پھر شدّت اختیار کر گیا ہے اور تین روز سے جاری شدید لڑائی کے نتیجے میں کم از کم بارہ افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔ ہلاک ہونے والوں میں کمبوڈیا کے سات اور تھائی لینڈ کے پانچ سپاہی شامل ہیں۔ تھائی فوج کے ترجمان کے مطابق اتوار کے روز مزید ایک تھائی فوجی لڑائی میں ہلاک ہوگیا۔ کمبوڈیا کی افواج نے بھی اپنے ایک فوجی کے ہلاک ہونے کی تصدیق کی ہے۔

Thailand Kambodscha Unruhen

اس تنازعے میں بڑی تعداد میں عام افراد بھی ہلاک ہوئے ہیں

نو سو برس پرانے ایک مندر کے اطراف کی متنازعہ زمین پر تھائی لینڈ اور کمبوڈیا دونوں اپنا حق جتاتے ہیں حالانکہ اقوامِ متحدہ کے مطابق کمبوڈیا کو اس زمین کا حق حاصل ہے۔کئی ماہ سے جاری سرحدی جھڑپوں میں دونوں ملکوں کے متعدد فوجی ہلاک ہوچکے ہیں اور سینکڑوں کی تعداد میں ان علاقوں سے لوگ نقل مکانی پر مجبور ہوچکے ہیں۔ فروری میں اقوامِ متحدہ اور علاقائی تنظیم آسیان کی مداخلت کے بعد یہ جھڑپیں وقتی طور پر رک گئی تھیں تاہم تین روز سے ان میں ایک مرتبہ پھر تیزی دیکھنے میں آئی ہے۔ یہ تنازعہ دونوں ممالک کے درمیان سالہا سال سے اختلاف کا سبب بنا ہوا ہے۔

اقوامِ متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے ان جھڑپں پر اپنی تشویش کا اظہار کیا ہے اور فریقین سے تحمل کا مظاہرہ کرنے کی اپیل کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اس مسئلے کا کوئی فوجی حل نہیں ہے۔ آسیان نے بھی جنگ بندی کی اپیل کی ہے۔

کمبوڈیا کا موقف ہے کہ اس سرحدی علاقے میں بین الاقوامی نگران تعین کیے جائیں جبکہ تھائی لینڈ اس کی مخالفت کرتا ہے۔ تھائی لینڈ کا کہنا ہے کہ اس مسئلے کا حل بین الاقوامی نہیں بلکہ دو طرفہ یا علاقائی ہے۔

رپورٹ: شامل شمس⁄ خبر رساں ادارے

ادارت: ندیم گِل

DW.COM