1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

تکنیکی وجوہات، اینڈیور کے آخری سفر میں تاخیر

خلائی شٹل اینڈیور کو آخری بار سفر پر روانہ ہونے پر نیک تمناؤں کے ساتھ رخصت کرنے کے لیے آنے والے ساڑھے سات لاکھ افراد کو تکنیکی وجوہات کی بنا پر خلائی شٹل کی پرواز میں تاخیر پر مایوس لوٹنا پڑا۔

default

اینڈیور کے آخری بار سفر پر روانہ ہونے کے تاریخی لمحات کو اپنی آنکھوں سے براہ راست دیکھنے کے لیے جمعہ کو کینیڈی اسپیس سینٹر پہنچنے والے ان افراد میں امریکی صدر باراک اوباما اور ان کے اہل خانہ بھی شامل تھے۔

امریکی صدر باراک اوباما، ان کی اہلیہ اور بیٹیوں نے تاہم کینیڈی اسپیس سینٹر میں خلائی جہاز اینڈیور کے عملے سے ملاقات کے علاوہ خلائی شٹل اٹلانٹس کو بھی قریب سے دیکھا۔ خلائی شٹل اٹلانٹس رواں برس جون میں اپنے آخری سفر پر روانہ ہو گا۔ امریکی خلائی تحقیقی ادارے ناسا کے یہ دونوں جہاز اس سفر سے واپسی کے بعد ریٹائرڈ ہو جائیں گے۔

خلائی جہاز اینڈیور کے آخری سفر کو دیکھنے کے لیے جمع ہونے والے افراد میں امریکی کانگریس کی رکن Gabrielle Giffords بھی شریک تھیں، جو شٹل کے کمانڈر کی بیوی بھی ہیں۔ Gabrielle Giffords رواں برس جنوری میں ایک قاتلانہ حملے میں بال بال بچی تھیں۔ اس حملے میں ان کے سر پر گولی لگی تھی تاہم وہ صحتیابی کی جانب لوٹ رہی ہیں۔ صدر اوباما نے Gabrielle Giffords سے بھی ملاقات کی۔

Flash-Galerie Raumfähre Endeavour zu ihrem letzten Flug zur ISS

اب یہ جہاز کئی دن کے بعد ہی روانہ ہو پائے گا

ماہرین کے مطابق خلائی جہاز کی روانگی میں تاخیر کی وجہ اس کے دو ہیٹرز میں پیدا ہونے والی خرابی ہے۔ یہ ہیٹرز جہازکی روانگی کے وقت اس کے ہائیڈرولک سٹیرنگ نظام کو توانائی فراہم کرتے ہیں۔ ناسا کا کہنا ہے کہ اس خرابی سے مکمل نجات میں کچھ دن کا وقت درکار ہو گا۔

تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ فی الحال یہ نہیں کہا جا سکتا کہ اس نظام کی مرمت میں کتنا وقت درکار ہوگا۔ ناسا کے مطابق گو کہ اس خرابی کا حل نہایت سادہ ہے تاہم اس نظام کے مکمل جائزے کے بعد ہی کوئی حتمی رائے دی جا سکے گی۔

رپورٹ : عاطف توقیر

ادارت : عاطف بلوچ

DW.COM

ویب لنکس