1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

تنازعات کے شکار بھارتی علاقوں میں صحافی خطرے میں

صحافیوں کے تحفظ کے لیے بین الاقوامی سطح پر فعال ایک تنظیم کے مطابق بھارت میں تنازعات کے شکار علاقوں میں کام کرنے والے صحافیوں کو انتقامی کارروائیوں کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

default

ذرائع ابلاغ کے کارکنوں کی بین الاقوامی تنظیم رپورٹرز وِدآؤٹ بارڈرز نے آج جمعہ کو اپنے ایک بیان میں کہا کہ بھارت میں، جو دنیا میں آبادی کے لحاظ سے دوسرا سب سے بڑا ملک ہے، بدامنی اور مسلح تنازعات کے شکار علاقوں میں فرائض انجام دینے والے صحافیوں کو اس طرح کی سکیورٹی سہولیات حاصل نہیں ہیں، جو بھارت ہی کے بڑے شہروں میں مصروف عمل صحافیوں کو حاصل ہوتی ہیں۔

NO FLASH Protest Reporter ohne Grenzen

روس میں سن دوہزار سے اب تک اٹھارہ صحافیوں کو قتل کیا جا چکا ہے

اس تنظیم نے اپنے بیان میں بھارتی حکومت سے یہ بھی کہا ہے کہ وہ گزشتہ ہفتے دو مختلف بھارتی ریاستوں میں ان دو صحافیوں کی گرفتاری کی وضاحت کرے، جن پر الزام تھا کہ انہوں نے پیشہ ورانہ طور پر کمیونسٹ باغیوں سے ملاقات کی تھی۔

Reporters without Borders کے مطابق گرفتار کیے جانے والے ان دونوں بھارتی صحافیوں میں سے ایک کو پولیس نے یکدم اپنی حراست میں لے لیا جبکہ دوسرا گرفتاری کے وقت ایک ادبی کانفرنس میں شرکت کر رہا تھا۔

Frankreich Afghanistan Erinnerung an Geiseln in Paris

رپورٹرز ود آؤٹ بارڈرز کا صدر دفتر پیرس میں ہے

اس تنظیم نے اپنے بیان میں ایسے افراد کے خلاف انتقامی طور پر الزامات عائد کیے جانے کی بھی مذمت کی، جو ایک صحافی کے خلاف مقدمے میں گواہ ہیں۔ اس واقعے میں ایک ایسے بھارتی صحافی کو اپنے خلاف کارروائی کا سامنا ہے جو جنوبی ریاست کرناٹک میں پولیس کی طرف سے نا انصافیوں اور اختیارات کے غلط استعمال سے متعلق تفصیلات منظر عام پر لایا تھا۔

فرانسیسی دارالحکومت پیرس میں قائم صحافیوں کی اس تنظیم نے بھارتی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ سرکاری حکام کی طرف سے طاقت کے غلط استعمال اور انتقامی کارروائیوں کے خلاف صحافیوں کو تحفظ کی ضمانت دے۔

اس کی ایک مثال دیتے ہوئے بھارتی ریاست چھتیس گڑھ کے وسطی علاقے میں ایک ایسی ملیشیا کا ذکر بھی کیا گیا ہے، جسے پولیس کی حمایت حاصل ہے اور جو صحافیوں اور انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے کارکنوں کو دھمکی آمیز خط بھیجتی رہتی ہے۔ اس ملیشیا کی طرف سے تین صحافیوں کو گزشتہ ماہ ایسے خط بھیجے گئے تھے، جن میں دھمکیاں دی گئی تھیں کہ وہ یا تو اس بھارتی ریاست سے چلے جائیں یا پھر ’کتے کی موت‘ مرنے کے لیے تیار ہو جائیں۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس