1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ترک شہر ازمیر میں بم دھماکا، دو ہلاک

ترک شہر ازمیر میں فائرنگ اور دھماکے کے ایک واقعے میں دو افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ حکام نے شبہ ظاہر کیا ہے کہ اس واقعے کے پیچھے کرد علیحدگی پسندوں کا ہاتھ ہو سکتا ہے۔

صوبے کے گورنر ایرول آئیلدز نے خبر رساں اداروں کو بتایا کہ پولیس نے جیسے ہی ایک مشکوک گاڑی کو ایک حفاظتی چوکی پر روکنے کی کوشش کی، اس میں بیٹھے ہوئے افرد نے پولیس پر فائرنگ کر دی۔ کہا جا رہا ہے کہ گاڑی کو بھی دھماکے سے اڑاتے ہوئے ایک حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا۔ گورنر نے حملہ آور کے فرار ہونے کی تصدیق تو نہیں کی تاہم یہ ضرور بتایا کہ ہلاک شدگان میں ایک پولیس اہلکار اور مقامی عدالت کا ایک ملازم شامل ہے۔ ان کا کہنا تھا، ’’جوابی فائرنگ سے دو حملہ آور بھی ہلاک ہوئے ہیں۔‘‘

گورنر ایرول آئیلدز کے بقول اس واقعے کےپیچھے کالعدم کر دستان ورکرز پارٹی’ پی کے کے‘ کا ہاتھ ہو سکتا ہے،’’ ابھی تک کی معلومات کے مطابق لگتا ہے کہ یہ پی کے کے کی کارروائی ہے۔ تاہم اس بارے میں حتمی طور پر تحقیقات مکمل ہونے اور حملہ آوروں کی شناخت کے بعد ہی کچھ کہا جا سکے گا۔‘‘ پی کے کے کی جانب سے گزشتہ برسوں کے دوران متعدد حملے کیے جا چکے ہیں، جس میں ملکی فوج اور پولیس کو خاص طور پر نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔

حکام نے بتایا کہ یہ واقعہ ازمیر کی ایک عدالت کے قریب پیش آیا۔ گورنر نے مزید بتایا کہ حملہ آوروں کے پاس دو خود کار بندوقین، راکٹ لانچرز اور آٹھ دستی بم تھے،’’ اس واقعے میں سات سے آٹھ مزید افراد زخمی بھی ہیں اور پولیس کی چابک دستی نے کسی بڑے حملے کو ناکام بنا دیا۔‘‘