1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

’ترکی میں فوجی بغاوت‘، ملک میں کرفیو کا نفاذ

ترک فوج کے ایک گروپ کی طرف سے ملک کی جمہوری حکومت کا تختہ الٹنے کی خبریں موصول ہو رہی ہیں جبکہ صدر ایردوآن نے نامعلوم مقام سے سی این این ترک نیوز ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ بغاوت کی کوشش ناکام بنا دی جائے گی۔

خبر رساں اداروں کے مطابق ترک فوج نے ملک بھر میں کرفیو نافذ کر دیا ہے جبکہ انقرہ میں فوجی ٹینک سڑکوں پر آ چکے ہیں اور انقرہ میں فوجی طیارے نیچی پروازیں کر رہے ہیں۔

خبر رساں اداروں کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ ترکی کے قومی نشریاتی ادارے ٹی آر ٹی پر ایک نیوز کاسٹر نے فوج کا بیان سنایا ہے کہ ملک بھر میں غیر معینہ مدت کے لیے کرفیو نافذ کر دیا گیا ہے۔

ترکی میں رونما ہونے والی اس غیر معمولی پیش رفت پر عالمی برداری م کی طرف سے شدید تشویش کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ ترک فوج کے اندر ایک گروپ نے جمہوری حکومت کا تختہ الٹ کر اقتدار سنبھال لیا ہے۔ تاہم ابھی تک ان خبروں کی مکمل طور پر تصدیق نہیں ہو سکی ہے۔

دوسری طرف ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ ملکی فوج کے ایک گروپ کی طرف سے بغاوت کی کوشش کے خلاف احتجاجی طور پر سڑکوں پر نکل آئیں۔

ایردوآن نے اس عہد کا اظہار کیا ہے کہ وہ اس صورتحال پر قابو پانے کے لیے’ممکنہ اقدام‘ کریں گے۔ انہوں نے یقین کا اظہار کیا کہ بغاوت کی کوشش ناکام ہو جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ وہ اب بھی ملک کے صدر اور کمانڈر ان چیف ہیں۔

ایردوآن نے مزید کہا کہ بغاوت کی کوشش کرنے والوں کو ’بھاری قیمت چکانا‘ پڑے گی۔

ایردوآن نے موبائل فون سے فیس ٹائم کے ذریعے سی این این ترک نیوز ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فوجی بغاوت کو ناکام بنانے کے لیے عوام کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ بغاوت کی یہ کوشش مختصر وقت میں ہی ناکام بنا دی جائے گی۔

دریں اثناء انقرہ اور استنبول میں فائرنگ کی آوازیں گونج رہی ہیں اور جرمن نیوز ایجنسیوں کی خبروں سے پتا چلا ہے کہ اتا ترک ایئرپورٹ کو فوج نے اپنے قبضے میں لے لیا ہے۔