1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

بھوک ہڑتالی یوگا گرو: ہسپتال میں حالت مستحکم

بھارت میں وسیع تر بدعنوانی کے خلاف ایک ہفتے سے اپنی بھوک ہڑتال جاری رکھنے والے مشہور یوگا گرو بابا رام دیو ابھی تک ہسپتال میں ہیں لیکن ان کی حالت مستحکم بتائی جا رہی ہے۔

default

نئی دہلی سے موصولہ رپورٹوں کے مطابق بابا رام دیو کے ترجمان نے آج ہفتہ کو بتایا کہ اس یوگا گرو کو ان کی مرضی کے خلاف ہسپتال میں رکھا جا رہا ہے، جہاں ان کی جان کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔ 46 سالہ بابا رام دیو نے چار جون کو نئی دہلی میں اپنی بھوک ہڑتال شروع کی تھی اور ان کا مطالبہ ہے کہ بھارتی معاشرے میں جگہ جگہ پائی جانے والی وسیع تر کرپشن کو ختم کرنے کے لیے حکومت کو بلاتاخیر فیصلہ کن اقدامات کرنے چاہیئں۔

NO FLASH Indien Hungerstreik Baba Ramdev

اس یوگا گرو کا یہ مطالبہ بھی ہے کہ اربوں کی وہ رقوم بھی غیر ملکی بینکوں سے واپس بھارت لائی جائیں، جو بہت سے بھارتی باشندوں نے غیر قانونی طور پر بیرون ملک جمع کر رکھی ہیں۔ چار جون کو نئی دہلی میں ان کی طرف سے بھوک ہڑتال شروع کیے جانے کے چند ہی گھنٹے بعد مقامی پولیس اہلکاروں نے بابا رام دیو کو زبردستی نئی دہلی سے ان کے آبائی شہر ہردوار منتقل کر دیا تھا، جہاں رام دیو نے اپنی بھوک ہڑتال جاری رکھی۔

NO FLASH Indien Hungerstreik Baba Ramdev

شمالی بھارت کی پہاڑی ریاست اترآکھنڈ میں مقامی حکام نے جمعہ کے روز یہ حکم دے دیا تھا کہ معاشرے میں بدعنوانی کے خلاف احتجاج کرنے والے اس یوگا گرو کو ہردوار میں ان کے آشرم سے ہسپتال منتقل کر دیا جائے۔ اس وقت رام دیو ہردوار کے نزدیک اترآکھنڈ کے دارالحکومت ڈیرہ دون کے جولی گرانٹ ہسپتال کے انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں زیر علاج ہیں۔

بابا رام دیو کے ترجمان تجارا والا کے مطابق رام دیو کو ڈاکٹروں نے ڈرپ لگا رکھی ہے اور ان کا بلڈ پریشر بھی کافی کم ہو چکا ہے تاہم ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

Indien Hungerstreik Baba Ramdev FLASH-GALERIE

بھارت میں اپوزیشن کی سب سے بڑی پارٹی اور ہندو قوم پرست جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی نے کہا ہے کہ باب رام دیو کی صحت مزید خراب ہونے کی صورت میں ان کی بجا طور پر کی جانے والی بھوک ہڑتال ایک قومی موضوع بن جائے گی۔ رام دیو کے ترجمان ایس کے تجارا والا نے بھارت میں اس مشہور یوگا گرو کے لاکھوں پیروکاروں سے درخواست کی ہے کہ وہ پر امن رہیں۔

بابا رام دیو کا احتجاج بھارت میں سول سوسائٹی کی طرف سے چلائی جانے والی اس تحریک کا حصہ ہے، جس کے تحت حالیہ مہینوں میں بدعنوانی کے کئی بڑے اسکینڈلوں کا شکار ہو جانے والی وزیر اعظم من موہن سنگھ کی حکومت سے مسلسل مطالبے کیے جا رہے ہیں کہ وہ ملک میں بدعنوانی کے خاتمے کے لیے فیصلہ کن اقدامات کرے۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس