1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بھارت کے مقابلے میں پاکستان کو کمزور نہیں کرنا چاہتے، جو بائڈن

نائب امریکی صدر جوبائیڈن نے کہا ہے کہ پاکستان کی خود مختاری کو امریکہ نہیں بلکہ شدت پسند نقصان پہنچا رہے ہیں۔ شدت پسندی صرف امریکہ اور پاکستان کے لیے ہی نہیں بلکہ پوری دنیا کے لیے بڑا خطرہ ہے۔

default

بدھ کو ایک روزہ دورے پر اسلام آباد پہنچنے پر جوبائیڈن نے صدر آصف علی زرداری، وزیراعظم یوسف رضا گیلانی اور بری فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی سے الگ الگ ملاقاتیں کیں۔

وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے ساتھ دو گھنٹے طویل ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے جوبائیڈن نے کہا کہ امریکہ پاکستان کے ساتھ مضبوط تعلقات چاہتا ہے اور اسی سبب امریکی صدر باراک اوبامہ اس سال پاکستان کا دورہ کریں گے۔

Pakistan USA Vizepräsident Joe Biden in Rawalpidi Nawabzada Malik Amad Khan

وزیر مملکت برائے خارجہ نے امریکی نائب صد کا استقبال کیا

جوبائیڈن نے اس تاثر کو بھی غلط قرار دیا کہ امریکہ نے القاعدہ کے خلاف جنگ پاکستان پر مسلط کر رکھی ہے۔ جوبائیڈن نے کہا کہ القاعدہ نے تین ہزار امریکیوں کو ہلاک کیا اور القاعدہ کے شدت پسند، پاکستانی شہریوں اور سیکورٹی فورسز کے خلاف کارروائیاں کرنے والوں کے ساتھی ہیں۔

انہوں نے کہا،'' القاعدہ نے امریکہ اور اس کے مفادات کے خلاف آج تک حملوں کی منصوبہ بندی جاری رکھی ہوئی ہے اور انہوں نے آپ کی مدد کے بغیر ہی سہی لیکن آپ ہی کے ملک کے دور دراز حصوں میں پناہ لے رکھی ہے۔‘‘

جوبائیڈن کا کہنا تھا کہ امریکہ اسلام اورمسلمانوں کا مخالف نہیں، اسلام امریکہ میں سب سے تیزی سے پھیلنے والا مذہب ہے۔ انہوں نے امریکہ پر اسلام دشمنی کا الزام عائد کرنے والوں کو چیلنج کیا کہ پوری دنیا میں ایک بھی ایسا ملک دکھا دیں جہاں مختلف مذاہب کے ماننے والوں کو امریکہ جتنی آزادی حاصل ہو۔

بائیڈن نے اس تاثر کی بھی نفی کی کہ امریکہ بھارت کے مقابلے میں پاکستان کو کمزور کرنا چاہتا ہے۔ نائب امریکی صدر کا کہنا تھا کہ امریکہ نے ماضی کے تجربات سے بہت کچھ سیکھا ہے اور اب وہ پاکستان کو ترک نہیں کرے گا بلکہ طویل المیعاد پارٹنرشپ کو مضبوط کیا جائے گا۔

Dreiergipfel Washington

بائڈن کے بقول امریکی صدر رواں سال پاکستان کا دورہ کریں گے

اس موقع پر پاکستانی وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ ان کی امریکی نائب صدر کے ساتھ ملاقات انتہائی خوشگوار ماحول میں ہوئی۔ انہوں نے کہا،'' پاکستان امریکہ کے ساتھ پائیدار، دیرپا اور دوطرفہ فائدہ مند شراکت داری کے لیے پرامید اور بااعتماد ہے۔‘‘

دریں اثناء جوبائیڈن نے پنجاب کے گورنر سلمان تاثیر کے قتل کی پرزور مذمت کرتے ہوئے اسے ایک قابل افسوس واقعہ قرار دیا۔ نائب امریکی صدر کا یہ بھی کہنا تھا کہ ان کا ملک سیلاب زدگان کی بحالی اور پاکستان کی اقتصادی میں اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔

رپورٹ: شکور رحیم، اسلام آباد

ادارت: افسراعوان

DW.COM

ویب لنکس