1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بھارت کو یورنیم برآمد پر تیار ہیں، آسٹریلوی وزیر اعظم

آسٹریلوی وزیر اعظم میلکم ٹرن بل نے اپنے دورہ بھارت کے دوران کہا ہے کہ کینبرا حکومت بھارت کو یورنیم برآمد کرنے پر تیار ہے۔ ان دونوں ممالک کے مابین تین برس قبل اس حوالے سے ایک ڈیل کو حتمی شکل دی گئی تھی۔

خبر رساں ادارے اے پی نے بتایا ہے کہ آسٹریلوی وزیر اعظم میلکم ٹرن بل نے دس اپریل بروز پیر نئی دہلی میں اپنے بھارتی ہم منصب کے ساتھ ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ ان کی حکومت بھارت کو یورنیم کی پہلی کھیپ جلد از جلد ارسال کرنے کا موقع تلاش کر رہی ہے۔ اس موقع پر دونوں رہنماؤں نے کہا کہ آسٹریلیا اور بھارت کے مابین توانائی کے شعبے میں تعاون میں اضافہ ہو رہا ہے۔

بھارت کے لیے یورینیم کی فروخت کا دروازہ کھول دیا، آسٹریلیا
’بھارت تھرمو نیوکلیئر ہتھیار تیار کر سکتا ہے‘

بھارت اور روس کے درمیان پرامن جوہری تعاون کا معاہدہ

آسٹریلیا نے تین برس قبل پرامن مقاصد کی خاطر بھارت کو یورنیم کی فراہمی پر رضا مندی ظاہر کی تھی اور اس حوالے سے ایک باقاعدہ ڈیل پر دستخط بھی کیے گئے تھے۔ آسٹریلیا کا شمار یورنیم برآمد کرنے والے بڑے ممالک میں ہوتا ہے۔ ٹرن بل نے صحافیوں کو بتایا کہ ان کی حکومت بھارت کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے تاکہ نئی دہلی کو اس کے سول جوہری پروگرام کی خاطر یورنیم فراہم کیا جائے۔

بھارت میں مجموعی طور پر بیس سے زائد جوہری ری ایکٹر فعال ہیں، جو ملک میں بجلی کی کافی پیداوار کو یقینی بنانے کی کوشش میں ہیں۔ مودی حکومت نے عوام سے وعدہ کر رکھا ہے کہ وہ سن 2019 تک پورے ملک کو بجلی کی فراہمی ممکن بنا دے گی۔

اس مقصد کی خاطر بھارت کو اپنے سول جوہری پلانٹس کے لیے یورنیم درآمد کرنے کی ضرورت ہے۔ ماہرین کے مطابق آسٹریلیا نئی دہلی حکومت کو مطلوبہ یورنیم فراہم کر سکتا ہے۔ یہ امر اہم ہے کہ بھارت میں اس وقت تقریبا چار سو ملین باشندوں کو بجلی کی سہولت میسر نہیں ہے۔

آسٹریلوی وزیر اعظم میلکم ٹرن بل کے اس دورے کے دوران دونوں ممالک نے دس اپریل کو انسداد دہشت گردی اور منظم جرائم کی روک تھام کے معاہدوں پر بھی دستخط کیے۔ اس موقع پر دونوں ممالک کے مابین تحفظ ماحول اور جنگلی حیات کے تحفظ کے علاوہ  سول ایوی ایشن سکیورٹی سے متعلق کئی اہم سمجھوتوں کو بھی حتمی شکل دی گئی۔ تاہم اس حوالے سے فوری طور پر تفصیلات جاری نہیں کی گئیں۔

بھارت کی خارجہ امور کی وزارت کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ آسٹریلوی وزیر اعظم ٹرن بل واپس ملک روانہ ہونے سے قبل منگل کے دن بھارت کی اقتصادی شہ رگ تصور کیے جانے والے شہر ممبئی کا دورہ بھی کریں گے۔

DW.COM