1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

بھارت میں کرائے کی ماؤں پر پابندی کا بل منظور

بھارت میں ’کرائے کی ماؤں‘ کے کاروباری حصول پر پابندی کی منظوری دے دی گئی ہے۔ بل کی حتمی منظوری کے بعد اِس کا نفاذ دس ماہ بعد کیا جائے گا۔

Indien Leihmutterschaft - Surrogacy Centre India (SCI) clinic in Neu-Delhi

بھارت میں اس ’صنعت‘ میں کئی ملین ڈالر کا کاروبار ہوتا ہے

بھارتی کابینہ نے آج ایک نئے بِل کی منظوری دے دی، جس کا مقصد بھارت میں کرائے کی ماؤں کی کاروباری اعتبار سے تیزی سے ترقی کرتی ہوئی ’صنعت‘ پر پابندی لگانا ہے۔ وزیر خارجہ سُشما سوراج نے کہا کہ آئندہ محض بھارت کے شادی شُدہ جوڑے ہی اس سہولت سے فائدہ اٹھا سکیں گے۔

اس طرح وہ ہزاروں غیر ملکی جوڑے، جو بچہ لینے کے لیے بھارت کا رخ کر رہے تھے، اب ایسا نہیں کر سکیں گے۔ سُشما سوراج نے کہا کہ یہ نیا قانون ایسی غریب اور نوجوان بھارتی لڑکیوں کو استحصال سے بچانے کے لیےتیار کیا گیا ہے، جو اپنے جسم میں دوسروں کے بچے پالتی ہیں۔

Indien Leihmutterschaft - Surrogacy Centre India (SCI) clinic in Neu-Delhi

غیر ملکی جوڑے اور ہم جنس پرست افراد قانون پاس ہو جانے کی صورت میں اس پابندی سے مستثنی ہوں گے

سوراج نے مزید کہا کہ بانجھ شادی شدہ جوڑے اولاد کے حصول کے لیے قریبی رشتہ داروں سے مدد لے سکتے ہیں۔ بھارتی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ غیر ملکی جوڑے اور ہم جنس پرست افراد قانون پاس ہو جانے کی صورت میں اس پابندی سے مستثنی ہوں گے۔ بھارت میں اس ’صنعت‘ میں کئی ملین ڈالر کا کاروبار ہوتا ہے اور ایسے کوئی دو ہزار مراکز ہیں، جہاں غیر ملکی بے اولاد جوڑوں کو ’کرائے کی مائیں‘ مہیا کی جاتی ہیں۔

گزشتہ برس بھارتی حکومت کے کرائے پر ماں کے حصول کی بندش کا عندیہ دینے کے بعد ملک کے قریب دو ہزارزچہ و بچہ مراکز میں اس کام سے منسلک افراد کی جانب سے احتجاج سامنے آیا تھا۔

Indien Leihmutterschaft - Zydus Hospital in Anand Town

بھارتی وزیر خارجہ کے مطابق مجوزہ قانون میں بچوں کی فلاح و بہبود پر بھی بات کی گئی ہے

بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج کا کہنا تھا کہ مجوزہ قانون میں بچوں کی فلاح و بہبود پر بھی بات کی گئی ہے کیونکہ بعض صورتوں میں دیکھا گیا ہے کہ بچے کے معذور پیدا ہونے پر والدین نے اسے قبول کرنے سے انکار کر دیا۔ خیال رہے کہ بھارتی حکومت کے مطابق ہر سال قریب دو ہزار بانجھ جوڑے بھارتی خواتین کو کرائے پر حاصل کرتے ہیں۔

DW.COM