1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

بھارت میں عزت کے نام پر قتل

بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں ایک نوجوان لڑکے اور اس کی ہم عمر ایک لڑکی کو عزت کے نام پر تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد ہلاک کر دیا گیا۔

default

بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق اس انیس سالہ لڑکے اوراس کی ہم عمر لڑکی کی لاشیں شمالی دہلی میں واقع ان کے ایک عزیز کے گھرسے ملیں۔

پولیس کے مطابق ان دونوں ہلاک شدگان کے جسموں پر تشدد کے واضح نشانات اور تیز دھار آلے سے لگائے گئے زخم بھی پائے گئے۔ ایک بھارتی ٹیلی وژن چینل کے مطابق مقتولہ کے اہل خانہ کو یہ بات پسند نہیں تھی کہ اس لڑکی کا تعلق کسی ایسے لڑکے سے ہو، جو خاندانی طور پر کسی دوسری ذات سے تعلق رکھتا ہو۔ پولیس کی رپورٹوں کے مطابق اس دوہرے قتل کی وجہ یہی خاندانی ناپسندیدگی بنی۔

نئی دہلی پولیس کے ذرائع نے منگل کے روز ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ پیر کی رات کو ہی لڑکی کے والد اور ایک چچاکو قتل کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا تھا۔ پولیس کے ایک اعلیٰ افسراین ایس بندیلا نے بتایا کہ ابتدائی تحقیقات کے بعد لڑکی کے پانچ رشتہ داراس جرم میں مرتکب پائے گئے ہیں۔

Frauenhaus in Pakistan

بھارتی سول سوسائٹی کے مطابق عزت کے نام پر قتل کے زیادہ تر واقعات رپورٹ نہیں ہوتے

بھارتی اخبار ہندوستان ٹائمز کے مطابق اس لڑکے اور اس کی دوست لڑکی کو پہلے قریب چار گھنٹوں تک شدید تشدد کا نشانہ بنایا گیا اوربعد ازاں انہیں بجلی کے جھٹکے لگا کر ہلاک کر دیا گیا۔

اگرچہ بھارت میں عزت کے نام پر قتل کے واقعات سے متعلق کوئی غیرجانبدارانہ اعدادوشمار موجود نہیں ہیں تاہم انسانی حقوق کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ بھارت میں اس طرح کے بہت سے واقعات رونما ہوتے ہیں۔

اس پس منظر میں بھارتی حکومت غور کر رہی ہے کہ انڈین پینل کوڈ میں ترمیم کی جائے اور عزت کے نام پر قتل کے جرم کو ایک ایسا گھناؤنا جرم قرار دے دیا جائے، جس کی سزاعمر قید یا موت ہو۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: مقبول ملک

DW.COM