1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بھارت میں سوائن فلو: ہلاک ہونے والوں کی تعداد 23 ہوگئی

بھارت میں سوائن فلوکی وبا کی سنگینی میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اس سے مرنے والوں کی تعداد 23ہوگئی ہے۔ اس صورت حال پر غورکرنے کے لئے جمعرات کے روز کابینہ کی میٹنگ ہوئی جب کہ میڈیکل بزنس سے وابستہ لوگوں کی چاندی ہوگئی ہے۔

default

بھارت میں سوائن فلو کے مریضوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے

ملک میں سوائن فلو سے پیداہونے والی دہشت پر غور وخوض کے لئے وزیراعظم ڈاکٹر من موہن سنگھ نے کابینہ کی میٹنگ طلب کی جس میں وزیر صحت غلام نبی آزاد نے صورت حال سے متعلق بریف کیا۔ انہوں نے بعد میں نامہ نگاروں سے گفتگو کرتے ہوئے میڈیا سے اپیل کی کہ وہ اس معاملے کو زیادہ خوفناک بناکر پیش نہ کرے۔ انہوں نے عوام سے بھی اپیل کی کہ وہ احتیاطی تدابیر اختیار کریں اور گھبرانے کی کوئی بات نہیں ہے۔

اسی دوران جنوبی شہر بنگلور میں ایک 26سالہ خاتون کی موت کے ساتھ ہی سوائن فلو سے مرنے والوں کی تعداد 20 ہوگئی۔ اس سے قبل اس وبا سے سب سے زیادہ متاثر مغربی شہر پونے میں آج صبح ایک 75 سالہ خاتون اور نوماہ کے ایک بچے کی موت کے ساتھ صرف پونے میں ہی ایک درجن افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں اور مہاراشٹر میں پچھلے دس دنوں کی دوران 15افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ حالات کی سنگینی کی مدنظرمہاراشٹرکی ریاستی حکومت نے بدھ کے روز تمام اسکولوں، کالجوں اور تعلیمی اداروں کو ایک ہفتے کے لئے بند کرنے کا حکم دیا۔

Indien Schweinegrippe

مہاراشٹر میں پچھلے دس دنوں کی دوران 15افراد ہلاک ہوچکے ہیں

دوسری طرف تمام شاپنگ مال اور سنیما ہالوں کو بھی تین دنوں تک بند رکھنے کی ہدایت دے دی گئی ہے۔ اس سے جمعہ کے روز کئی فلموں کو ریلیزکرنے کا پروگرام ملتوی کرنا پڑا ہے۔

ایچ ون این ون یا سوائن فلو ملک کے کئی حصوں میں پھیل چکا ہے۔ احمدآباد، بڑودہ، ناسک، چنئی اورترواننت پورم میں اس سے ایک ایک شخص کی جب کہ ممبئی میں دو افراد کی موت ہوچکی ہے۔ اس بیماری سے لوگوں میں دہشت پھیل گئی ہے اور میڈیکل بزنس سے وابستہ لوگ اس کافائدہ اٹھاکر دونوں ہاتھوں سے روپے بٹور رہے ہیں۔ ان میں ڈاکٹر اور اسپتال سے لے کر ماسک اور صابن بنانے والی کمپنیاں تک شامل ہیں۔ صرف دارالحکومت دہلی میں ہی ایک کروڑ روپے سے زائد کے ماسک فروخت ہوچکے ہیں۔ حالانکہ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ این 95 نامی یہ ماسک عام لوگوں کو خریدنے کی ضرورت نہیں ہے بلکہ ایک صاف ستھرا رومال ہی کافی ہے۔کچھ کمپنیاں آس پاس کے بیکٹریا کو ختم کرنے کا دعوے کرنے والی ایسی مشینیں بیچ رہی ہیں جن کی قیمت دس دس لاکھ روپے ہے۔ ایک اندازے کے مطابق اگر یہ صورت حال برقرار رہی تو صرف سوائن فلو کے نام پر طبی کاروبار دس ارب روپے تک پہنچ جائے گا۔

Indien Schweinegrippe

اس بیماری سے لوگوں میں دہشت پھیل گئی ہے

حکومت نے اس بیماری میں کام آنے والی ٹیمی فلو کی دو کروڑ گولیاں منگوانے کا آڈر دیا ہے، جن کی قیمت تقریبا 560کروڑ روپے ہے۔ وزیر صحت غلام نبی آزاد نے ماسک اور دواؤں کی ذخیرہ اندوزی کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کا عندیہ دیا ہے۔

اس دوران دارالحکومت دہلی کے کئی اسکولوں کو ایک ہفتے کے لئے بند کردیا گیا ہے تاہم ماہرین کا خیال ہے کہ اس سے سوائن فلو پر قابو پانے میں مدد نہیں ملے گی۔ کلاوتی شرن اسپتال کے ڈاکٹر ایس ایس گلیریا کا کہنا ہے : ’’حالانکہ حکومت نے اسکولوں کو تو بند کردیا ہے لیکن بچے اب سنیما ہالوں یا شاپنگ مالس میں دکھائی دے رہے ہیں، جس سے اصل مقصد ہی فوت ہوگیا۔کچھ لوگ اس وبا سے نمٹنے کے لئے میکسیکو ماڈل پر عمل کرنے کا مشورہ دے رہے ہیں جس کے تحت عوامی مقامات پر لوگوں کے آنے جانے پر پابندی عائد کی جاسکتی ہے۔ تاہم ڈاکٹر گلیریا کہتے ہیں کہ تجربات سے پتہ چلتا ہے کہ یہ ماڈل بہت زیادہ کارگر ثابت نہیں ہوا ہے۔

در یں اثناء حکومت نے اس بیماری کی روک تھام کے لئے متعدد اقدامات کا اعلان کیا ہے۔سول ایوی ایشن کی ڈائریکٹریٹ نے بھارت سے آپریٹ کرنے والی تمام بین الاقوامی ایئرلائنس کو اپنے طیارے کے مسافروں کو ہیلتھ اسکریننگ کارڈ تقسیم کرنے کی ہدایت دی ہے دوسری طرف بیرون ملک سے آنے والے تمام مسافروں پر نگاہ رکھی جارہی ہے۔

رپورٹ : افتخار گیلانی، نئی دہلی

ادارت : عاطف توقیر