1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بھارت میں باغیوں کی کارروائی چوبیس اہلکار ہلاک

بھارتی ریاست مغربی بنگال کے ضلع مدناپور میں ماؤنواز باغیوں نے پولیس کے ایک کیمپ پر حملہ کر کے کم از چوبیس اہلکاروں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

default

بھارتی وزیرداخلہ پی چدم برم نے کہا ہے کہ تحقیقات کے بعد ہی وثوق کے ساتھ یہ کہا جا سکتا ہے کہ ریاست مغربی بنگال میں مسلح ماوٴ نواز ایک پولیس کیمپ پر حملہ کرنے میں کامیاب کیسے ہوئے۔ کل پیر کو مغربی بنگال کے ضلع مدناپورمیں مسلح ماوٴ نواز باغیوں نے ایک پولیس کیمپ پر حملہ کر کے سیکیورٹی فورسز کے24 اہلکاروں کو ہلاک کر دیا تھا۔ چدم برم نے اعتراف کیا کہ بہت سارے شعبوں میں کوتاہی ہوئی ہے۔ انہوں نے منگل کو اپنے ایک بیان میں حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے لواحقین کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کیا۔

حکام کے مطابق بیس کے قریب مسلح باغی موٹر سائیکلوں پر آئے اور انہوں نے پولیس کیمپ میں موجود اہلکاروں پر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی اور دستی بم پھینکے۔ اس واقعے میں درجنوں اہلکار زخمی بھی ہوگئے، جن میں سے متعدد کی حالت نازک بتائی جاتی ہے۔

مغربی بنگال میں ماؤ نواز کمیونسٹ باغیوں نے گزشتہ سال اکتوبر میں بھی اسی نوعیت کی ایک بڑی کارروائی میں سترہ پولیس اہلکاروں کو ہلاک کردیا تھا۔ مغربی بنگال میں یہ تازہ حملہ ایسے وقت کیا گیا جب بھارتی فورسز متعدد ریاستوں سے با‌غیوں کو نکالنے کی کارروائیوں میں مصروف ہیں۔ ریاست مغربی بنگال میں ایک روز قبل سرکاری دستوں کی اسی نوعیت کی ایک کارروائی میں دو باغیوں کو ہلاک کر دیا گیا تھا جبکہ دس گرفتار کر لئے گئے تھے۔

Indien Bürgerkrieg Paramilitärs Naxalites

نکسل باغی عسکری مشق کرتے ہوئے

پولیس کے مطابق سیکیورٹی فورس پر کیا گیا خونریز حملہ باغیوں کے خلاف حکومتی کریک ڈاؤن کا ردعمل ہے۔ بھارت کی انتیس میں سے تقریباً تیرہ ریاستوں میں سرگرم ماؤ نواز باغی اپنی جدوجہد کو غریبوں کی حقوق کی جنگ قرار دیتے ہیں۔ ان کی قیادت کے بارے میں کسی کو واضح معلومات نہیں جبکہ ان کی مجموعی تعداد کا اندازہ دس اور بیس ہزار کے درمیان تک لگایا جاتا ہے۔

بھارتی وزیر اعظم من موہن سنگھ ماؤ نواز عسکریت پسندوں کو داخلی سلامتی کے لئے سب سے بڑا خطرہ قرار دے چکے ہیں۔ بھارت میں گزشتہ سال ماؤ نواز باغیوں کے خونریز حملوں میں چھ سو سے زائد افراد مارے گئے تھے۔ نئی دہلی حکومت نے ماؤ نوازوں کی عشروں سے جاری بغاوت کے مسلسل بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ کو کنڑول کرنے کے لئے گزشتہ سال سات ریاستوں میں سیکیورٹی فورسز کے اضافی دستے بھی متعین کر دئے تھے۔

رپورٹ: شادی خان سیف

ادارت: مقبول ملک

DW.COM