1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بھارت: ’سب سے تیز رفتار شرح نمو والی بڑی معیشت‘

اکنامک سروے آف انڈیا کے تازہ ترین سالانہ اعداد و شمار کے مطابق ملک میں مالی سال دو ہزار سولہ، سترہ کے دوران اقتصادی ترقی کی شرح سات اور ساڑھے سات فیصد کے درمیان رہنے کی توقع ہے، جس سے ملکی معیشت مزید مضبوط ہو گی۔

Indien Narendra Modi Werbekampagne Make In India

سروے کے مطابق مالی سال دو ہزار سولہ، سترہ کے دوران بھارتی معیشت میں ترقی کی متوقع شرح 7.6 فیصد کے قریب رہے گی

بھارتی دارالحکومت نئی دہلی سے جرمن خبر رساں ادارے ڈی پی اے کی جمعہ 26 فروری کو ملنے والی رپورٹوں کے مطابق اکنامک سروے آف انڈیا نے شرح نمو سے متعلق اپنے ان اعداد و شمار کی بنیاد ان متعدد اور بہت متنوع اقتصادی عوامل کو بنایا ہے، جو کسی بھی معیشت کی ترقی میں فیصلہ کن کردار ادا کرتے ہیں۔

یہ سالانہ اقتصادی سروے وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت کے تیار کردہ اس نئے قومی بجٹ کی بنیاد بھی ہے، جو پروگرام کے مطابق ملکی وزارت خزانہ کی طرف سے آئندہ پیر یکم مارچ کے روز قومی پارلیمان میں پیش کیا جائے گا۔

سالانہ سروے کے مطابق اندازہ ہے کہ دنیا کی بڑی معیشتوں میں سے سال 2016 کے دوران بھارت ممکنہ طور پر وہ ملک ثابت ہو گا، جس کی معیشت سب سے زیادہ تیز رفتاری سے ترقی کرے گی۔ سروے کے مطابق مالی سال دو ہزار سولہ، سترہ کے دوران بھارتی معیشت میں ترقی کی متوقع شرح 7.6 فیصد کے قریب رہے گی۔

Indien Ministerpräsident Narendra Modi

وزیر اعظم نریندر مودی بھارت کو ترقی کی راہوں پر گامزن کرنا چاہتے ہیں

بھارت میں مالی سال یکم اپریل کو شروع ہو کر 31 مارچ کو ختم ہوتا ہے۔ قومی اقتصادی سروے کے مطابق ملکی معیشت جس متاثر کن کارکردگی کا مظاہرہ کر رہی ہے، اس کے بڑے اسباب ریگولیٹری اصلاحات، اقتصادی کھلے پن کی پالیسی، براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کی اجازت اور توانائی کے شعبے میں متعارف کرائی جانے والی وہ اصلاحات ہیں، جو اقتصادی بہتری کے عمل میں بہت معاون ثابت ہوئی ہیں۔

ڈی پی اے نے لکھا ہے کہ نئی دہلی میں ملکی وزارت خزانہ نے طویل المدتی بنیادوں پر ملکی معیشت میں ترقی کے حقیقی امکانات کی 8 سے لے کر 10 فیصد تک سالانہ شرح کی امید ظاہر کی ہے۔

DW.COM