1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بھارت دس نئے جوہری پلانٹ تعمیر کرے گا

بھارتی وفاقی کابینہ نے دس نئے جوہری ری ایکٹر قائم کرنے کی تجویز کی منظوری دے دی ہے۔ ان ری ایکٹرز کے قیام کے بعد بھارت کی جوہری صلاحیت دوگنی ہو جائے گی۔

Indischer Premierminister Narendra Modi (AFP/Getty Images/I. S. Kodikara)

دس نئے ایٹمی ری ایکٹروں کی تعمیر کی منظوری بھارتی وزیرِ اعظم نریندر مودی کے زیرِصدارت ہونے والے کابینہ کے اجلاس میں دی گئی

بھارتی حکومت کی جانب سے آج بروز بدھ جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق دس نئے ایٹمی ری ایکٹروں کی تعمیر کی منظوری بھارتی وزیرِ اعظم نریندر مودی کے زیرِصدارت ہونے والے کابینہ کے اجلاس میں دی گئی۔ بھاری پانی کے ان ایٹمی ری ایکٹرز کی بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت سات ہزار میگا واٹ ہو گی۔ بھارت کی توانائی پیدا کرنے کی موجودہ صلاحیت 678 میگا واٹ ہے جو اسے بائیس آپریشنل پلانٹس سے حاصل ہوتی ہے۔

 نئے جوہری ری ایکٹرز بھارتی ساختہ ہوں گے اور ان سے براہ راست یا بلواسطہ 33،000 افراد کو ملازمت فراہم کی جائے گی۔ بھارت میں توانائی کے وزیر پیوش گوئل کا کہنا ہے کہ نئے ری ایکٹروں کے قیام کا فیصلہ پائیدار ترقی اور توانائی کے شعبے میں خود انحصاری کے حکومتی عزم کا عکاس ہے۔

بیان میں البتہ یہ وضاحت نہیں کی گئی کہ یہ جوہری ری ایکٹر کہاں لگائے جائیں گے اور کب تک کام کرنا شروع کریں گے۔ بھارت، بجلی کی پیداوار کے لیے ستر فیصد حیاتیاتی ایندھن اور بنیادی طور پر کوئلے پر انحصار کرتا ہے۔

 بھارتی حکومت کے مطابق سن 2030 تک ملک کی بڑھتی ہوئی توانائی کی  40 فیصد سے زائد ضرورت کو صاف اور قابلِ تجدید ذرائع سے پورا کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ 

DW.COM