1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بھارتی وزیر اعظم کا دورہ ء بنگلہ دیش

بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ اپنے دو روزہء دورہ بنگلہ دیش کے دوران ڈھاکہ پہنچ گئے ہیں۔ اس دوران وہ باہمی تعاون اور اشتراک کے کئی اہم معاہدوں کو حتمی شکل دیں گے تاہم اہم تنازعات پر کوئی پیشرفت مشکل نظر آتی ہے۔

default

بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ اپنے تاریخی دورہ ء بنگلہ دیش کے دوران جب ڈھاکہ پہنچے تو ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔ بنگلہ دیش کے معرض وجود میں آنے کے بعد سے ہی بھارت کی کوشش ہے کہ دونوں ہمسایہ ممالک کے تعلقات بہتر رہیں۔ تاہم حالیہ کچھ برسوں کے دوران دونوں ممالک کے تعلقات میں کچھ سرد مہری پیدا ہوئی ہے۔ اس کی وجہ یہ  ہے کہ نئی دہلی حکومت کو یہ خدشہ ہے کہ انتہا پسند بنگلہ دیش کی سر زمین کو بھارت کے خلاف کارروائیوں میں استعمال میں لا رہے ہیں۔

بھارت اور بنگلہ دیش کے کئی حکام نے کہا ہے کہ منموہن سنگھ کے اس دورے کے دوران دونوں ممالک کے مابین آبی وسائل کے مشترکہ استعمال پر معاہدہ ممکن نہیں ہو سکے گا۔ ہمالیہ سے نکلنے والے دو اہم دریا تیستا اور فینی بھارت اور بنگلہ دیش سے گزرتے ہوئے خلیج بنگال گرتے ہیں۔ مغربی بنگال کی وزیر اعلٰی ممتا بینر جی نے بنگلہ دیش کے ساتھ آبی وسائل کی تقیسم کے حوالے سے مجوزہ معاہدے کو مسترد کر دیا ہے۔

ناقدین کا خیال ہے کہ منموہن سنگھ اور بنگلہ دیشی وزیر اعظم شیخ حسینہ واجد  کی طرف سے اس معاہدے کو حتمی شکل دینے کے لیے مغربی بنگال کی حکومت کی منظوری ناگزیر ہے۔

NO FLASH Manmohan Singh

منموہن سنگھ گزشتہ بارہ برسوں کے دوران بنگلہ دیش کا دورہ کرنے والے پہلے بھارتی وزیر اعظم ہیں

بنگلہ دیش کی وزیر خارجہ دیپو مونی نےگزشتہ روز صحافیوں سے گفتگو کے دوران امید ظاہر کی تھی کہ منموہن سنگھ کے اس دورے کے دوران اس معاملے پر کوئی مثبت پیشرفت ہو سکتی ہے تاہم منگل کو وزرات خارجہ کی طرف سے جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا ہےکہ کم ازکم سنگھ کے رواں دورے کے دوران آبی وسائل کے حوالے سے کسی ڈیل کی کوئی توقع نہیں ہے۔

اسی طرح بھارت کی طرف سے ٹرانزٹ راستے کی پیشکش پر ڈھاکہ حکومت تحفظات رکھتی ہے۔ ڈھاکہ حکام کے مطابق اس معاہدے کو حتمی شکل دینے کے لیے ابھی تک کوئی ضوابط طے نہیں کیے گئے ہیں، اس لیے سنگھ کے دورے کے دوران اس معاملے پر بھی پیشرفت کا امکان کم ہی ہے۔ بھارت چاہتا ہے کہ وہ اپنےشمال مشرقی علاقوں تک رسائی کے لیے بنگلہ دیش کے  راستے زمینی یا ریل کا ٹرانزٹ روٹ استعمال کر سکے۔

 

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: حماد کیانی

DW.COM

ویب لنکس