1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

بھارتی غرباء کو مفت انٹرنیٹ فراہم کیا جائے، فیس بک کے بانی

فیس بک کے بانی مارک زَکربرگ نے بھارتی انتظامیہ پر زور ڈالا ہے کہ وہ اپنی عوام کو مفت انٹرنیٹ فراہم کرے۔ اِس مناسبت سے شروع منصوبہ، تنازعے کا شکار ہو کر رہ گیا ہے۔

USA Narendra Modi und Mark Zuckerberg

تقریباً 3.2 ملین بھارتی شہریوں نے مفت سہولیات کی سروس کی بحالی کے لیے ایک پٹیشن پر دستخط کیے ہیں

انٹرنیٹ ڈاٹ او آر جی (internet.org) جسے اب بنیادی سہولیات کی سروس کہا جاتا ہے، اس کا آغاز رواں برس بھارت کے چند صوبوں میں کیا گیا تھا تاہم اسے بھارت میں شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ اس سہولت کے ذریعے عام شہری کو انٹرنیٹ کے بغیر چند ویب سائٹس تک رسائی حاصل ہوتی ہے۔ اس ماہ کے شروع میں بھارت کی ٹیلی کام اتھارٹی نے ریلائنس کمیونیکیشنز کو بغیر کسی مناسب وجہ کے اس انٹرنیٹ پروگرام کو بند کرنے کا حکم دے دیا تھا۔

مارک زَکربرگ نے بھارت کے روزنامہ انگریزی اخبار ’دا ٹائمز آف انڈیا‘ کے اداریہ میں اس مفت سہولت کی بحالی کے لیے ایک مضمون تحریر کیا ہے۔ اس مضمون میں انہوں نے لکھا ہے ’’ اگر ہم یہ تسلیم کرتے ہیں کہ انٹرنیٹ کی سہولت سب کو میسر ہونی چاہیےتو ہمیں بنیادی سہولیات کی سروس کی بحالی کا ساتھ دینا چاہیے۔ گزشتہ برس ہم نے اس موضوع پر طویل بحث دیکھی تھی۔ ‘‘

تقریباً 3.2 ملین بھارتی شہریوں نے مفت سہولیات کی سروس کی بحالی کے لیے ایک پٹیشن پر دستخط کیے ہیں ۔

دوسری جانب بھارت کے اہم کاروباری شخصیات اور ٹیکنالوجی سے منسلک افراد نے اس سہولت کے خلاف آواز اٹھائی ہے۔ ان کے مطابق غریب لوگوں کے لیے مفت انٹرنیٹ کی سہولت سے بہتر ہے کہ وہ اُن کمپنیوں کے کنٹرول شدہ انٹرنیٹ کی سروس کو استعمال کریں جن پر محفوظ مواد فراہم کیا جاتا ہے۔

مارک زَکربرگ نے اپنے مضمون میں یہ بھی لکھا ہے، ’’ بنیادی سہولیات کی سروس کے حوالے سے اِس کے ناقدین غلط معلومات پھیلا رہے ہیں۔‘‘

فیس بک کمپنی بھارت میں اخبارت اور بل بورڈز پر اس حوالے سے اشتہارات بھی شائع کر رہی ہے جس میں یہ پیغام دیا جا رہا ہے کہ ’بھارت میں اس مفت سہولت پر پابندی لگنے کا خطرہ ہے‘ اور ’ اس سہولت کا مقصد صرف غریب عوام تک رابطہ کرنے کی سہولت فراہم کرنا ہے۔‘