1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بھارتی انتخابات: چار ریاستوں میں نکسل باغیوں کے حملے

نکسل باغیوں نے چار ریاستوں میں پرتشّدد کارروائیاں سرانجام دی ہیں، جن میں کئی سیکیورٹی فورسز کے اہلکاروں سمیت اب تک سترہ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

default

بھارت میں کم از کم چار ریاستوں میں نکسل باغیوں کا اثر ہے

بھارت میں پارلیمانی انتخابات کے پہلے مرحلے میں لوک سبھا کی 124 نشستوں کے لئے ووٹنگ جاری ہے۔ نکسل باغیوں کی طرف سے پرتشّدد کارروائیوں اور شدید گرمی کے باعث اڑیسہ اور چھتیس گڑھ ریاستوں میں ووٹنگ کی شرح دوپہر تک پندرہ فی صد رہی تاہم سہ پہر تک پولنگ شرح میں اضافے کی توقع کی جارہی ہے۔

نکسلیوں نے ریاست جھارکھنڈ اور چھتیس گڑھ میں پولنگ کے عمل کو متاثر کرنے کے لئے کئی حملے کئے۔ جھارکھنڈ کے لاتیہار اور چھتیس گڑھ کے مانگنر پولنگ سٹیشنوں پر نکسل باغیوں نے فائرنگ بھی کی۔ لاتیہار میں بارودی سرنگ کے ایک دھماکے میں سرحدی حفاظتی فورس BSF کے پانچ اہلکاروں سمیت سات افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

الیکشن کمیشن کے مطابق ریاست بہار میں ووٹنگ کی شرح 30 جبکہ چھتیس گڑھ میں 25 فی صد رہی۔

Die indische Rote Armee

نکسل باغی اکثر انتخابات کے موقع پر اپنی طاقت کا مظاہرہ کرتے ہیں

پولنگ آج جمعرات کی صبح سات بجے شروع ہوئی اور شام پانچ بجے تک جاری رہے گی لیکن سلامتی کے اعتبار سے حساس اور نکسل متاثرہ علاقوں میں تین بجے تک ہی ووٹ ڈالے گئے۔

بھارتی پارلیمان کے ایوان زیریں یعنی لوک سبھا میں کل 543 نشستیں ہیں۔ جن ریاستوں میں آج ووٹنگ ہورہی ہے ان میں اتر پردیش، بہار، جھارکھنڈ، چھتیس گڑھ، اروناچل پردیش، منی پور، شورش زدہ ریاستیں جموّں و کشمیر اور آسام، اڑیسہ، ناگالینڈ، آندھراپردیش، میگھالیہ، اور کیریلہ شامل ہیں۔

عام انتخابات کا پوراعمل پانچ مرحلوں میں مکمل ہوگا۔ انتخابات کے پانچویں اور آخری مرحلے میں تیرہ مئی کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔