1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

بنڈس لیگا: نمبروَن پوزیشن پر میونخ کی’کمزور گرفت‘

جرمن قومی فٹ بال چیمپئن شپ بنڈس لیگا کے تیرہویں میچ ڈے کے اختتام پر بائرن میونخ بدستور سرفہرست ہے تاہم اس میچ ڈے کے اختتام پر اس پوزیشن پر اس کی گرفت کچھ کمزور پڑ گئی ہے۔

default

بنڈس لیگا کے تیرہویں میچ ڈے کے آخری روز اتوار کو دو میچ کھیلے گئے۔ ان میں اشٹٹ گارٹ نے آؤگسبرگ کو ایک کے مقابلے میں دو گول سے ہرایا جبکہ ہیمبرگ نے ہوفن ہائیم کو دو صفر سے شکست دی۔

ہفتے کے مقابلوں میں ڈورٹمنڈ نے بائرن میونخ کو صفر کے مقابلے میں ایک گول سے ہرا کر اس کی سرِفہرست پوزیشن کو خطرے میں ڈال دیا تھا۔

اسی روز دیگر مقابلوں میں شالکے نے نیوریمبرگ کو صفر کے مقابلے میں چار گول سے ہرایا۔ فرائی برگ اور ہیرتھا برلن کا میچ دو دو گول سے برابر رہا۔ وولفس برگ نے ہینوور کو ایک کے مقابلے میں چار گول سے پچھاڑا۔ مؤنشن گلاڈ باخ نے بریمن کو صفر کے مقابلے میں پانچ گول سے ہرایا۔

قبل ازیں جمعے کو اس میچ ڈے کے پہلے مقابلے میں لیورکوزن نے کائزرلاؤٹرن کی ٹیم کو دو صفر سے مات دی تھی۔

بنڈس لیگا کے پوائنٹس ٹیبل کی صورت حال:

بائرن میونخ اٹھائیس پوائنٹس کے ساتھ بدستور سرفہرست ہے۔ ڈورٹمنڈ اور مؤنشن گلاڈ باخ چھبیس چھبیس پوائنٹس کے ساتھ بالترتیب دوسرے اور تیسرے نمبر پر ہیں۔ شالکے چوتھے نمبر پر ہے اور اسے پچیس پوائنٹس حاصل ہیں۔

پانچویں نمبر پر تئیس پوائنٹس کے ساتھ بریمن ہے۔ اکیس پوائنٹس کے ساتھ اشٹٹ گارٹ چھٹے نمبر پر ہے جبکہ اتنے ہی پوائنٹس کے ساتھ لیورکوزن ساتویں نمبر پر ہے۔ ہینوور انیس پوائنٹس کے ساتھ آٹھویں نمبر پر ہے۔ ہوفن ہائیم اور ہیرتھا برلن سترہ سترہ پوائنٹس کے ساتھ بالترتیب نویں اور دسویں نمبر پر ہیں۔

Babak Rafati

ریفری بابک رفعت

اس ہفتے ریفری بابک رفعتی کی جانب سے خودکشی کی کوشش نے بنڈس لیگا کے حلقوں کو تشویش زدہ رکھا۔ انہوں نے ہفتے کو کولون کے ایک ہوٹل میں اپنی جان لینے کی کوشش کی تھی۔ تاہم بروقت مداخلت سے انہیں بچا لیا گیا اور وہ ہسپتال میں زیرعلاج ہیں۔

اسی وجہ سے ہفتے کو کولون اور مائنز کی ٹیموں کے درمیان ہونے والا میچ مؤخر کر دیا گیا تھا۔ رفعتی اسی میچ میں ریفری کے فرائض انجام دینے والے تھے۔

بابک کے والد Djalal Rafati نےکولون کے اخبار ایکسپریس سے بات چیت میں کہا کہ وہ اپنے بیٹے کی جانب سے خودکشی کی کوشش کو نہیں سمجھ پائے۔ ان کا کہنا تھا کہ بابک بظاہر کسی مسئلے کا شکار نظر نہیں آتا تھا اور نہ ہی اس نے ان سے حالیہ دنوں میں کسی ذہنی دباؤ کا ذکر کیا۔

رپورٹ: ندیم گِل

ادارت: عاطف بلوچ

DW.COM