1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بلوچستان میں امامت کے مسئلے پر فائرنگ، 18 زخمی

پولیس حکام کے مطابق مسلمانوں کے ایک اہم ترین مذہبی تہوار عید الاضحیٰ کے موقع پر نماز عید کی امامت کے مسئلے پر ہونے والے تصادم کے دوران فائرنگ کی وجہ سے کم از کم 18 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

default

خبررساں ادارے اے پی کے مطابق پاکستان کے جنوب مغربی صوبہ بلوچستان کے ضلع خضدار میں یہ تنازعہ اس وقت کھڑا ہوا جب دومختلف متحارب گروپوں نے ایک مسجد میں نماز عید کی امامت کی کوشش کی۔ ایک سینیئر پولیس اہلکار جاوید احمد کے مطابق دونوں مقامی علماء کے پیروکاروں نے اس تنازعے کے دوران لاٹھیوں اور ڈنڈوں کے استعمال کے علاوہ آتشیں اسلحے سے فائرنگ بھی کی۔ اس علاقے کی رہائشی پشتون اور بلوچ آبادی روایتی طور پر ہھتیار اپنے ساتھ رکھتی ہے۔

Indische Muslime feiern Ramadan

پاکستان بھر میں نماز عید کےلیے بڑے بڑے اجتماعات منعقد کیے گئے

اس واقعے کے علاوہ پاکستان بھر میں کروڑوں مسلمانوں نے آج بدھ کو پرامن طور پر نماز عید ادا کی۔ اس سلسلے میں ملک کے تمام چھوٹے بڑے شہروں میں نماز عید کے بڑے بڑے اجتماعات منعقعد ہوئے۔ نماز عید کے بعد مسلمان پیغمبر حضرت ابراہیم کی سنت پر عمل کرتے ہوئے عیدالضحیٰ کے موقع پر جانوروں کی قربانی کرتے ہیں۔

ادھرپاکستانی میڈیا کے مطابق آبادی کے لحاظ سے ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں قربانی کی کھالیں چھیننے کی کوششوں کے دوران ہونے والے تصادم میں دو افراد جاں بحق ہوگئے ہیں۔ پولیس کے مطابق کراچی کے علاقے لیاری میں قربانی کی کھالیں مانگنے کے لیے آنے والے افراد سے علاقہ مکینوں کی تلخ کلامی کے بعد فائرنگ کا سلسلہ شروع ہوگیا جس سے دو افراد ہلاک جبکہ دو بچوں سمیت 10 افراد زخمی ہوگئے۔

رپورٹ : افسراعوان

ادارت : کِشور مُصطفیٰ

DW.COM

ویب لنکس