1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

’بلا پھر سے ٹوُٹ گیا‘

پاکستان کی حکمران پارٹی ’پی ایم ایل‘ نے اتوار کو صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور کے حلقہ این اے 122 میں ضمنی انتخابات کے غیرحتمی اور غیر سرکاری نتائج کے تحت اپوزیشن جماعت پی ٹی آئی کو شکست دے دی ہے۔

سرکاری ٹی وی چینل ’پی ٹی وی‘ کے مطابق غیر حتمی اور غیر سرکاری طور پر حاصل ہونے والے نتائج سے لاہور کے حلقہ این اے 122 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار اور سابق اسپیکرایاز صادق کی پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار علیم خان پر برتری حاصل کیے ہوئے ہیں۔

پاکستانی میڈیا کی طرف سے سامنے آنے والے اعداد و شمار کے مطابق غیررسرکاری نتائج میں وزیر اعظم نواز شریف کے قریبی ساتھی اور اتحادی ایاز صادق پاکستان تحریک انصاف پی ٹی آئی کے اُمیدوار علیم خان کے مقابلے میں 4,000 ووٹوں کی معمولی برتری حاصل ہوئی ہے۔

اتوار کو پولنگ کا عمل دن بھر جاری رہا تاہم پولنگ اسٹیشنوں پر موجود چند پریزائڈنگ افسران کا کہنا تھا کہ ووٹرز کا ٹرن آؤٹ توقع سے کافی کم رہا۔ بعض پولنگ اسٹیشنوں سے پاکستان تحریک انصاف اور ن لیگ کے کارکنوں کے مابین تصادم کی اطلاعات بھی موصول ہوئیں جس کے بعد پولیس نے کچھ گرفتاریاں بھی کیں۔

Pakistan PTI Chairman Imran khan

اتوار کے روز پی ٹی آئی اور مسلم لیگ ’ن‘ کے حامیوں کے مابین تصادم کی اطلاعات ہیں

پیر کی صبح الیکشن کمشن کی طرف سے جاری ہونے والے ایک سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ 348,000 رجسٹرڈ ووٹروں میں سے اتوار کو ہونے والی ووٹنگ میں 200,000 نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا۔

یاد رہے کہ 2013 ء میں لاہور کے حلقہ این اے 122 کے انتخابات میں بےضابطگیوں کے الزامات کے تحت مسلم لیگ ن کے امیدوار ایاز صادق کی کامیابی کو کالعدم قرار دے دیا تھا۔ جس کے بعد عمران خان کی قیادت والی پاکستان تحریک انصاف نے الیکشن میں دھاندلیوں کے خلاف سڑکوں پر نکل کر احتجاج کا سلسلہ شروع کیا تھا۔

اتوار کو ہونے والے ضمنی انتخابات کے غیرحتمی اور غیر سرکاری نتائج کے سامنے آنے کے بعد مسلم لیگ ن کے امیدوار ایاز صادق نے لاہور میں کارکنوں اور حامیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اب عمران خان کو دھرنوں کی سیاست ترک کر کے ملک کی تعمیر و ترقی کے لیے کردار ادا کرنا چاہیے۔

DW.COM