1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

بلائنڈ کرکٹ: پہلا ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ بھارت میں

اس سال دسمبر میں ہونے والے نابینا کھلاڑیوں کے کر کٹ کے اولین ٹوئنٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ مقا بلوں کی میزبانی بھارت کرے گا جبکہ 2014ء میں نابینا کھلاڑیوں کے لیے ون ڈے کرکٹ کا ورلڈ کپ ٹورنامنٹ بھی منعقد کرایا جائے گا۔

default

یہ ورلڈ کپ بنگلور میں کھیلا جائے گا

ورلڈ بلائنڈ کرکٹ کونسل کے صدر ڈیوڈ ٹاؤنلی نے دبئی میں بتایا کہ اس کونسل کے متحدہ عرب امارات میں ہونے والے دو روزہ اجلاس میں رائے شماری کے نتیجے میں رکن ملکوں نے اپنی مشاورت کے آخری دن یعنی اتوار کو یہ فیصلہ کیا کہ نابینا کھلاڑیوں کے ٹی ٹوئنٹی مقابلوں کے اپنی نوعیت کے اولین ورلڈ کپ کی میزبانی بھارت کو دے دی جائے۔

بھارت میں یہ ٹورنامنٹ جنوبی شہر بنگلور میں اس سال تین دسمبر کو شروع ہو گا۔ ابھی تک اس ٹورنامنٹ میں مقابلوں کا شیڈول حتمی طور طے نہیں ہوا تاہم یہ بات یقینی ہے کہ یہ ورلڈ کپ مقابلے زیادہ سے زیادہ چودہ روز تک جاری رہیں گے۔

ڈیوڈ ٹاؤنلی کے مطابق ان ورلڈ کپ مقابلوں میں ورلڈ بلائنڈ کرکٹ کونسل کے رکن ملک شرکت کریں گے، جن میں آسٹریلیا، نیوزی لینڈ، سری لنکا، بھارت، پاکستان، جنوبی افریقہ، بنگلہ دیش، نیپال، ویسٹ انڈ‌یز اور انگلینڈ شامل ہیں۔

Flash-Galerie Entstehung der Schrift - Blindenschrift

تعلیم اور مطالعے کی خاطر نابینا افراد کے لیے تیار کردہ بریل سسٹم

دبئی میں ہونے والے نابینا کھلاڑیوں سے متعلق عالمی کرکٹ کونسل کے اس اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ سن 2014 میں نابینا کھلاڑیوں کے لیے ایک روزہ میچوں کے ورلڈ کپ مقابلوں کا انعقاد بھی کیا جائے گا۔ ان مقابلوں کے میزبان ملک کا انتخاب اس سال ستمبر میں عمل میں آئے گا۔ ڈیوڈ ٹاؤنلی کے مطابق اب تک بلائنڈ کرکٹ کے ون ڈے مقابلوں کے اس عالمی کپ کی میزبانی کے لیے پاکستان اور جنوبی افریقہ نے دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ تاہم ان ملکوں کی طرف سے تاحال کوئی باقاعدہ درخواستیں نہیں دی گئیں۔

معمول کی بین الاقوامی کرکٹ کے ون ڈے مقابلوں کے اس سال ہونے والے ورلڈ کپ کا اہتمام کرکٹ کے نگران عالمی ادارے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے کیا تھا اور اس کی میزبانی مشترکہ طور پر بھارت، سری لنکا اور بنگلہ دیش نے کی تھی۔ کرکٹ کا یہ ون ڈے ورلڈ کپ میزبان ملک بھارت نے جیتا تھا۔

رپورٹ: مقبول ملک

ادارت: امجد علی

DW.COM

ویب لنکس