1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بغداد دوہرے خود کش حملے، 60 گرفتار

اتوار کے روز بغداد بم حملوں کے تناظر میں عراقی انتظامیہ نے سیکیورٹی فورسز کے 60 سے زائد اہلکاروں کو گرفتار کر لیا ہے۔ ان دوہرے خودکش بم حملوں میں 153 افراد ہلاک ہو گئے تھے

default

جمعرات کے روز عراقی فوج کے ترجمان جنرل قاسم عطا نے بین الاقوامی خبر رساں اداروں سے بات چیت کرتے ہوئے ان گرفتاریوں کی تصدیق کی۔ انہوں نے بتایا کہ یہ اہلکار بغداد کے علاقے صالحہ کی سیکیورٹی پر مامور تھے۔ گرفتارشدگان میں مختلف عہدوں سے تعلق رکھنے والے گیارہ افسران اور 50 دیگر سیکیورٹی اہلکار شامل ہیں۔

بغداد کے مرکز میں واقع علاقے صالحہ میں وزارت انصاف اور صوبائی گورنر کے دفتر کی عمارتوں کو ان حملوں میں نشانہ بنایا گیا تھا۔ ان حملوں میں 500 سے زائد افراد زخمی بھی ہوئے تھے۔ جن میں سے متعدد شدید زخمی تاحال ہسپتال میں ہیں۔

عراقی جنرل قاسم عطا کے مطابق ان حملوں کی تفتیش کرنے والے کمیشن نے ان اہلکاروں کی گرفتاری کا حکم دیا۔ عطا کے مطابق ان تمام اہلکاروں کا تعلق سیکیورٹی فورسز کے صالحہ سیکشن سے ہے۔

Bagdhad Autobombe Anschlag Terror Flash-Galerie

حملوں میں 500 سے زائد افراد زخمی بھی ہوئے

دریں اثناء عراقی وزارت صحت کے ترجمان صباح عبداللہ نے کہا ہے کہ ان حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی مجموعی تعداد 153 ہو گئی ہے، جبکہ ہلاک اور زخمی ہونے والے زیادہ تر سرکاری ملازم ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ دھماکے اتنے شدید تھے کہ ان سے لاشیں بری طرح مسخ ہو گئیں۔ ان کا کہنا تھا تھا کہ ہلاک ہونے والوں کے بارے میں فی الحال یہ تک بتانا مشکل ہے کہ ان میں عورتوں، مردوں اور بچوں کی تعداد کیا تھی۔

القاعدہ سے تعلق رکھنے والی جماعت ’’اسلامی ریاست عراق‘‘ نے ان حملوں کی ذمہ داری قبول کی تھی۔

رپورٹ: عاطف توقیر

ادارت: عاطف بلوچ