1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

’’برطانوی ماڈل مسٹر ٹیلر سے ’فلرٹ‘ کرتی رہی تھیں‘‘

برطانوی سُپر ماڈل کیمبل کی سابقہ ایجنٹ کیرول وائٹ کے مطابق لائبیریا کے سابق صدر چارلس ٹیلر نے جنوبی افریقہ میں ایک ڈنر پارٹی کے موقع پر کیمبل کو ہیرے دئے، اس سے قبل ماڈل ان سے ’فلرٹ‘ کرتی رہیں تھیں!

default

اداکارہ میا فیرو نے بھی عدالت میں گواہی دی

کیرول کے مطابق صدر ٹیلر نے کھانے کے دوران ہی برطانوی ماڈل کو ہیرے دینے کا وعدہ کیا تھا۔

اگرچہ یہ واقعہ سن 1997ء کا ہے لیکن تیرہ سال کا طویل عرصہ گزرنے کے باوجود یہ تنازعہ اپنی جگہ قائم ہے کہ کیا لائبیریا کے سابق صدر نے برطانوی ماڈل این کیمبل کو ہیرے دئے تھے یا نہیں؟ جنگی جرائم کے مقدمے کے دوران ماڈل کی سابقہ ایجنٹ کیرول وائٹ کے تازہ بیان نے اس تنازعے کو پھر دلچسپ بنا دیا ہے۔

Niederlande Kriegsverbrechertribunal Den Haag Charles Taylor

لائیبیریا کے سابق صدر چارلس ٹیلر

برطانوی سُپر ماڈل اس سے پہلے یہ کہہ چکی ہیں کہ انہیں نہیں معلوم کہ انہیں ہیرے کس نے دئے لیکن ان کی سابقہ ایجنٹ کے تازہ انکشاف کے بعد اب یہ کیس ڈرامائی صورت اختیار کر گیا ہے۔

وکلاء استغاثہ کا کہنا ہے کہ مسٹر ٹیلر سیرا لیون کے باغیوں کے ساتھ تجارت کرتے تھے۔ استغاثہ کا کہنا ہے کہ لائبیریا کے سابق صدر چارلس ٹیلر سیرا لیون کے باغیوں کو ہیروں کے بدلے ہتھیار فراہم کرتے تھے۔ سن 1980ء اور 1990ء کی دہائیوں کے دوران سیرا لیون اور لائبیریا میں بحرانی صورتحال کے باعث ہزاروں شہری مارے گئے تھے۔

Niederlande Kriegsverbrechertribunal Den Haag Naomi Campbell

برطانوی ماڈل کیمبل

دی ہیگ میں سیرا لیون سے متعلق خصوصی عدالت کے سامنے لائبیریا کے سابق صدر چارلس ٹیلر کا مؤقف یہ ہے کہ وہ باغیوں کے ساتھ کسی قسم کی تجارت میں ملوث نہیں رہے ہیں۔ مسٹر ٹیلر پر گیارہ مختلف معاملات کے سلسلے میں کیسز درج ہیں لیکن وہ اپنے اوپر عائد الزامات کو بے بنیاد قرار دیتے ہیں۔

کیمبل کی سابقہ ایجنٹ کیرول وائٹ نے یہ بھی بتایا ہے کہ سن 1997ء میں برطانوی سُپر ماڈل جنوبی افریقہ میں ڈنر پارٹی کے موقع پر مسٹر ٹیلر کے ساتھ ’فلرٹ‘ کرتی رہیں۔ اس ڈنر پارٹی کے میزبان اُس وقت کے جنوبی افریقی صدر نیلسن منڈیلا تھے۔ وائٹ نے عدالت کے سامنے اپنے بیان میں یہ بھی بتایا کہ لائبیریا کے سابق صدر مسٹر ٹیلر نے سپر ماڈل کیمبل کو مزید ہیرے دینے کا وعدہ بھی کیا تھا۔

باسٹھ سالہ ٹیلر سن 2006ء میں گرفتار ہوئے اور اگلے ہی سال ان کے خلاف مقدمے کا باقاعدہ آغاز ہوا۔ ہیروں کے بارے میں ایجنٹ کیرول وائٹ کے انکشاف کے بعد ’بُلڈ ڈائمنڈ‘ کا کیس کیسا بھی رخ اختیار کرتا ہے، وہ یقیناً دلچسپی کا باعث بنے گا۔

رپورٹ: گوہر نذیر گیلانی/خبر رساں ادارے

ادارت: شادی خان سیف

DW.COM