1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

برازیل: صدارتی انتخابات کے فاتح کا فیصلہ دوسرے مرحلے میں

برازیل کے صدارتی انتخابات میں ورکرز پارٹی کی ڈِلما روسیف کو برتری حاصل رہی ہے۔ تاہم وہ مقررہ ووٹ حاصل نہیں کر سکیں، جس کی وجہ سے صدارتی نشست کا فیصلہ انتخابات کے دوسرے مرحلے سے ہوگا۔

default

ڈِلما روسیف ووٹ کاسٹ کر رہی ہیں

برازیل میں صدارتی انتخابات کے لئے پولنگ اتوار کو ہوئی۔ 98 فیصد ووٹوں کے نتائج کے مطابق صدر لولا ڈی سلوا کی منتخب امیدوار ڈِلما روسیف کو47 فیصد ووٹ ملے۔ سپریم الیکٹورل ٹریبونل کے مطابق ان کے بڑے حریف یوزے سیرا 33 فیصد ووٹ حاصل کر سکے۔

انتخابات کے دوسرے مرحلے سے بچنے کے لئے

Präsidentschaftwahl Brasilien Lula

برازیل کے صدر لولا ڈی سلوا

کسی بھی اُمیدوار کو 50 فیصد سے زائد ووٹ حاصل کرنا تھے۔ موجودہ صورت حال کے تناظر میں 31 اکتوبر کو انتخابات کا دوسرا مرحلہ ہوگا۔

سوشل ڈیموکریٹک پارٹی کے یوزے سیرا نے پہلے ہی اُمید ظاہر کی تھی کہ انہیں اتنے ووٹ ضرور حاصل ہوجائیں گے، جن سے انتخابات کا دوسرا مرحلہ ناگزیر ہو جائے گا۔

اُدھر صدر لولا ڈی سلوا نے بھی کہہ دیا تھا کہ انتخابات کے دوسرے مرحلے کی نوبت آ سکتی ہے۔ انہوں نے کہا، ’انتخابات کے دو مرحلے ہوں گے۔ میں نے بھی پہلے مرحلے میں کبھی الیکشن نہیں جیتا۔ ابھی اس لڑائی میں ایک مہینہ اور لگے گا، تو چلیں یہ لڑائی شروع کرتے ہیں۔‘

دوسری جانب لولا ڈی سلوا کا یہ بھی کہنا ہے کہ جیت کے لئے ڈِلما روسیف کی پوزیشن مضبوط ہے۔ تجزیہ کاروں کے مطابق وہ پہلے مرحلے میں ہی جیت جاتیں تو ان کی پوزیشن اور بھی مستحکم بن جاتی۔

ہفتہ کو جاری کئے گئے رائے عامہ کے ایک جائزے میں بھی روسیف کے لئے پہلے مرحلے میں جیتنا انتہائی مشکل قرار دیا گیا تھا۔ تاہم جائزوں میں یہ بھی کہا گیا کہ، دوسرے مرحلے میں ہی سہی، ان کی جیت یقینی ہے۔ اس صورت میں روسیف برازیل کی پہلی خاتون صدر ہوں گی۔

بتایا جاتا ہے کہ روسیف نے ان انتخابات کے لئے انتہائی محتاط مہم چلائی اور اس دوران صدر لولا کی مقبولیت اور ملک میں جاری معاشی ترقی کے عمل سے بھرپور فائدہ اٹھایا۔

No Flash Präsidentschaftswahlen in Brasilien

صدارتی اُمیدوار ٹیلی ویژن مباحثے کے دوران

واضح رہے کہ لولا ڈی سلوا کو برازیل کی تاریخ کا مقبول ترین صدر قرار دیا جاتا ہے۔ وہاں کے آئین کے مطابق وہ تیسری مدت کے لئے الیکشن میں حصہ نہیں لے سکے۔ ڈِلما روسیف ان کی چیف آف سٹاف رہ چکی ہیں۔

برازیل کثیر الآباد جمہوری ریاستوں میں سے ایک ہے۔ وہاں رجسٹرڈ ووٹروں کی تعداد 13 کروڑ 60 لاکھ ہے جبکہ ہر رجسٹرڈ ووٹر کے لئے ووٹ ڈالنا لازمی ہے۔

رپورٹ: ندیم گِل

ادارت: عاطف بلوچ

DW.COM

ویب لنکس