1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

بحیرہ روم میں آپریشنز، انیس سو مہاجرین کو بچا لیا گیا

اطالوی ساحلی محافظوں نے بتایا ہے کہ بحیرہ روم میں بھٹکتے ہوئے مزید انیس سو مہاجرین کو بچا لیا گیا ہے۔ موسم کی شدت میں کمی کے بعد شمالی افریقہ سے یورپ پہنچنے والے تارکین وطن کی تعداد میں اضافہ نوٹ کیا جا رہا ہے۔

خبر رساں ادارے ڈی پی اے نے اطالوی ساحلی محافظوں کے حوالے سے بتایا ہے کہ ستائیس مئی بروز جمعہ بحیرہ روم کے سمندری علاقے سے مزید انیس سو مہاجرین کو محفوظ مقامات پر منتقل کر دیا گیا۔ یہ مہاجرین شمالی افریقی ملک لیبیا سے اٹلی پہنچنے کی کوشش میں تھے۔

اٹلی کے کوسٹ گارڈز کے مطابق جمعے کے دن مجموعی طور پر سترہ امدادی مشن مکمل کیے گئے۔ بتایا گیا ہے کہ بحیرہ روم کو عبور کرنے کی کوشش کے دوران بحری فوج کے جہازوں نے ان مہاجرین کو محفوظ مقامات پر پہنچایا۔

اطالوی ساحلی محافظوں کے ترجمان نے ڈی پی اے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت ایک اور امدادی مشن بھی جاری تھا، جس کے تحت مہاجرین سے بھری ایک اور کشتی میں سوار افراد کو ریسکیو کیا جا رہا تھا۔

تازہ اعداد و شمار کے مطابق رواں ہفتے کے دوران بحیرہ روم کے پانیوں میں سفر کے دوران بچائے جانے والے کل مہاجرین اور تارکین وطن کی تعداد اب تک بارہ ہزار ہو چکی ہے۔

حکام نے پہلے ہی خدشہ ظاہر کیا تھا کہ موسم سرما کے بعد جب موسم معتدل ہو گا تو شمالی افریقہ سے سمندری راستے سے یورپ پہنچنے کی کوششیں کرنے والے افراد کی تعداد زیادہ ہو جائے گی۔

یورپی یونین نے ان مہاجرین کو یورپ پہنچنے سے روکنے کی خاطر انسانوں کے اسمگلروں کے خلاف کارروائی بھی شروع کر رکھی ہے لیکن بحیرہ روم کے ذریعے یورپ پہنچنے کی کوشش کرنے والے افراد کی تعداد میں کوئی کمی واقع نہیں ہو رہی۔

Mittelmeer Libyen Flüchtlingsboot Rettungsaktion

رواں ہفتے اٹلی کے ساحلی علاقوں تک پہنچنے میں کامیاب ہونے والے ان مہاجرین کی مجموعی تعداد سولہ سو اکتالیس تک پہنچ گئی ہے

بین الاقوامی ادارہ برائے مہاجرت (آئی او ایم) کے مطابق رواں ہفتے اٹلی کے ساحلی علاقوں تک پہنچنے میں کامیاب ہونے والے ان مہاجرین کی مجموعی تعداد سولہ سو اکتالیس تک پہنچ گئی ہے۔

جمعرات کے دن بحیرہ روم میں ایک کشتی کو حادثہ بھی پیش آ گیا تھا، جس کی وجہ سے بیس مہاجرین کی ہلاکت کی تصدیق بھی کر دی گئی ہے۔ اسی امدادی کارروائی میں چھیانوے افراد کو بچا بھی لیا گیا تھا۔