1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بحری جہاز ’تارپیڈو‘ سے تباہ ہوا، جنوبی کوریا

جنوبی کوریا کے وزیر دفاع نے کہا ہے کہ ممکن ہے چند روز قبل شمالی کوریا کی سمندری حدود کے قریب تباہ ہونے والے جہاز کو تارپیڈو سے نشانہ بنایا گیا ہو۔

default

ملکی پارلیمان میں جنوبی کوریا کے وزیردفاع کِم تائے کی جانب سے اس بیان کے سامنے آنے کے بعد ان افواہوں کو تقویت ملی ہے، جن میں مسلسل یہ کہا جا رہا ہے کہ ڈوبنے والے جہاز کو میزائل کے ذریعے تباہ کیا گیا ہے۔ گزشتہ ہفتے ہونے والے اس حادثے میں 46 افراد ہلاک ہوگئے تھے اور اپنے ابتدائی بیان میں جنوبی کوریا نے واقعے میں شمالی کوریا کے ملوث ہونےکو یکسر رد کر دیا تھا۔

Südkoreanisches Kriegsschiff gesunken

تلاش کا کام تاحال جاری ہے

کِم تائے نے اپنے تازہ بیان میں کہا کہ عین ممکن ہے جہاز کی تباہی کی بنیادی وجہ اسے تارپیڈو یا میزائل سے حملے کا نشانہ بنایا جانا ہو تاہم اس واقعے کی تحقیقات میں تمام دیگر پہلو بھی ملحوظ خاطر رکھے جائیں گے۔

وزیردفاع کی جانب سے اس سے قبل ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ جہاز کی تباہی کی وجہ اس کا کسی مائن سے ٹکرانا بھی ہوسکتی ہے۔ دریں اثناء جنوبی کوریا کے صدر لی میونگ باک نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ واقعے کی تحقیقات کرتے ہوئے نہ تو کسی افواہ پر کان دھرا جائے گا اور نہ ہی کسی پہلو کو نظر انداز کیا جائے گا۔

دریں اثناء تحقیقات میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ اس جہاز کی تباہی سے قبل قریب موجود جنوبی کوریا کے ایک اور جہاز نے ایک نامعلوم کشتی پر فائرنگ بھی کی تھی تاہم کہا گیا تھا کہ یہ فائر پرندوں کے ایک جھنڈ پر کئے گئے تھے۔

جنوبی کوریا کی بحریہ کے اس جہاز کی تباہی کے بعد سے اب تک غوطہ خور ڈوبنے والوں کی تلاش کے کام میں مصروف ہیں۔ ملکی بحریہ کے ترجمان کے مطابق اس جہاز پر سوار تمام سپاہی اتنے تربیت یافتہ تھے کہ وہ ڈوبنے کے باوجود کافی دن تک زندہ رہ سکتے ہیں۔

رپورٹ : عاطف توقیر

ادارت : کشور مصطفیٰ