1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

بالی وڈ: ’کمینے‘ صرف بالغوں کے لیے

بالی وُڈ میں اِن دنوں شاہد کپور اور پریانکا چوپڑا کی ریلیز کے لئے تیار فلم "کمینے" کے چرچے ہیں۔ تاہم بھارتی فلم سینسر بورڈ نے اسے "اے سرٹیفیکیٹ" دیا ہے یعنی یہ فلم صرف بالغوں کے لئے مناسب ہے ۔

default

فلم کی ہیروئن پریانکا چوپڑہ

Krassimira Stoyanova als Desdemona an der Staatsoper Wien

وشال بھردواج کی گزشتہ فلم ’اومکارا‘ شیکسپیئر کے ڈرامے ’اوتھیلو‘ سے متاثر تھی

27 سالہ شاہد نے ہفتہ کو فلم کی پبلسٹی کے لئے پنجاب اور ہریانہ کے مشترکہ دارالحکومت چندیگڑھ کا دورہ کیا۔ اس موقع پر ایک انٹرویو میں انہوں نے بھی اس بات پر حیرت کا اظہار کیا کہ ان کی اس فلم کو "A" سرٹیفیکیٹ کیوں دیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ سینسر بورڈ نے فلم میں تشدد کے مناظر کو اس کی وجہ قرار دیا ہے۔ تاہم شاہد نے جواز پیش کیا کہ عامر خان کی فلم "گجنی" میں بھی تشدد کے مناظر تھے لیکن اسے "اے سرٹیفیکیٹ" نہیں دیا گیا جبکہ "کمینے" میں نازیبا زبان کا استعمال بھی نہیں کیا گیا۔

اس فلم کے ہدایت کار وشال بھردواج کو بنیادی طور پر آرٹ فلموں کے لئے جانا جاتا ہے۔ ان کی زیر ہدایت بننےو الی فلم "اومکارا" نے 2005ء میں مقبولیت کے جھنڈے گاڑے، جس کے مرکزی کرداروں میں اجے دیوگن، کرینا کپور اور سیف علی خان شامل تھے۔ فلم کا مرکزی خیال شیکسپیئر کے ڈرامے اوتھیلو سے لیا گیا تھا۔

شاہد کے مطابق "کمینے" بھردواج کی پہلی کمرشل فلم ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یہ فلم لَواسٹوری نہیں اور وہ اس میں ڈبل رول میں نظر آئیں گے۔

شاہد نے بتایا کہ اس کی شوٹنگ ممبئی میں ہوئی ہے اور انہوں نے ڈبل رول میں "چارلی" اور "گڈو" کا کردار نبھایا ہے۔ ان میں سے ایک کردار ٹھیک طرح سے بول نہیں پاتا۔ شاہد کے مطابق اس کردار کے لئے انہوں نے ENT ڈاکٹروں اور دیگر ماہرین سے مشاورت کی۔