1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

’بابا آکٹوپس‘ اور’ نجومی خار پشت ‘ سپین کے حق میں

بدھ کے روز جرمنی اور سپین فیفا ورلڈ کپ کے دوسرے سیمی فائنل میں ایک دوسرے کے مد مقابل ہو رہے ہیں۔ پاؤل نامی آکٹوپس اور لیون نامی کانٹے دار سیہ نے بھی سپین کو اس میچ کا فاتح قرار دیا ہے۔

default

پاؤل عالمی شہرت اختیار کر گیا ہے۔ ہر طرف اس آکٹوپس کے چرچے ہیں

جرمن ٹیم کے مداحوں کے لئے وہ لمحے انتہائی مایوسی کا باعث بنے، جب پاؤل نامی معروف آکٹوپس نے سپین کو اس میچ کا فاتح قرار دیا۔ اسی طرح شہرChemnitz کے چڑیا گھرمیں بھی لیون نامی ایک ’سیہ‘ سے جرمنی اور سپین کے سیمی فائنل کی پیشین گوئی کروائی گئی۔ اس نے بھی سپین کو ہی اس میچ کا فاتح قرار دیا۔

پاؤل اور لیون کی پیشین گوئیوں پر یقین کئے بغیر جرمنی اور سپین کی ٹیموں نے اپنی پریکٹس جاری رکھی ہوئی ہے۔ ٹورنامنٹ کے آغاز میں سپین کی کارکردگی کچھ متاثر کن نہیں تھی۔ لیکن وقت کے ساتھ ساتھ اس میں نکھار آتا گیا۔ دونوں ٹیمیں ٹاپ فٹ ہیں۔ جرمن کوچ یوآخم لوو نے اس میچ کے لئے ایک الگ حکمت عملی اپنائی ہے۔

NO FLASH Jogi Löw Fürbitte

جرمن کوچ یوآخم لوو سپین کے جارحانہ انداز سے بہت متاثر ہیں

لوو کہتے ہیں کہ گزشتہ برسوں کے دوران سپین کے کھلاڑی ایک منظم ٹیم کے طور پر ابھرے ہیں۔ جارحانہ کھیل کا معاملے میں اس ٹیم کا کوئی جواب نہیں ہے اور سپین کے موجودہ کھلاڑیوں کو ایک ٹیم کے طور پر مل کر کھیلنے کا بھی تجربہ ہے۔

کچھ بھی ہو یہ حقیقت ہے کہ جرمنی اور سپین نے اب تک بہترین کھیل کا مظاہرہ کیا ہے۔ اب سیمی فائنل سے قبل دونوں ٹیموں کےکھلاڑی ایک دوسرے کی تعریفیں کرتے نظر آ رہے ہیں۔ جرمن کھلاڑی باستیان شوائن شٹائیگر کی نظر میں سپین انگلینڈ اورارجنٹائن سے زیادہ سخت حریف ثابت ہو گا۔ ہسپانوی فارورڈ ڈاوڈ وِیا کہتے ہیں کہ جرمن ٹیم کے کھیل کو دیکھ کر یہ کہا جا سکتا ہے کہ ان کا جذبہ انتہائی بلندیوں پر ہے۔ سپین کے کوچ دیل بوسکے کے خیال میں بھی یہ مقابلہ آسان نہیں ہوگا۔ ان کے بقول سب کو اس پر فخر ہونا چاہیے کہ جرمنی، ہالینڈ اورسپین نے سیمی فائنل تک رسائی حاصل کی ہے۔

WM Südafrika 2010 Spanien vs Paraguay Flash-Galerie

ونسینتے دیل بوسکو کو اس بات پر فخر ہے کہ عالمی کپ پورپ میں ہی رہے گا

بہرحال یہ بات اب واضح ہے کہ فٹ بال کا عالمی کپ یورپ میں ہی رہے گا۔ سپین میں نہ صرف اپنی ٹیم کی سیمی فائنل تک تاریخی رسائی پر خوشیاں منائی جا رہی ہیں بلکہ جب گزشتہ روز عالمی شہرت یافتہ آکٹوپس پاؤل اورلیون نامی سیہ نے سپین کے حق میں فیصلہ دیا تو ان خوشیوں کو چار چاند لگ گئے۔ پاؤل کے مطابق ہسپانوی ٹیم کو ایک صفر سے کامیابی حاصل ہوگی۔

عالمی فٹ بال کپ کے آغاز سے ہی پاؤل کے تمام اندازے درست ثابت ہوئے ہیں۔ جرمن شہر اَوبرہاؤزن کے مچھلی گھر میں موجود ’آکٹوپس بابا‘ جس وقت پیشین گوئی کے لئے تیرتے ہوئے آئے، اس وقت وہاں ذرائع ابلاغ کے نمائندے ایک بڑی تعداد میں موجود تھے۔

Stachelschwein Orakel Weltmeisterschaft 2010

لیون نے سپین کے جھنڈے کے رنگ کی ناشپاتی کھا کر اپنی یشین گوئی کی

اس تقریب کو دنیا کے کئی چینلز نے براہ راست دکھایا۔ اس سے قبل ارجنٹائن کے خلاف میچ میں پاؤل کو فیصلہ کرنے میں بہت مشکل ہوئی تھی اور تقریباً ایک گھنٹے بعد اس نے جرمنی کے پرچم والے باکس سے کھانا اٹھا کر کھایا تھا۔ دو ہزار آٹھ میں ہونے والی پورپی چیمپیئن شپ کے فائنل میں بین الاقوامی سطح پر مشہور’آکٹوپس بابا‘ نے جرمنی کے حق میں فیصلہ دیا تھا لیکن اس میچ میں سپین کوکامیابی حاصل ہوئی تھی۔ تاہم اس مرتبہ بھی جرمن ٹیم آج کے سیمی فائنل میں یہ ثابت کر سکتی ہے کہ ’آکٹوپس بابا‘ اور نجومی سیہ کی پیشین گوئیاں ہمیشہ صحیح ثابت نہیں ہوتیں۔

رپورٹ: عدنان اسحاق

ادارت: مقبول ملک

DW.COM