1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

ایک مہاجر کی کہانی، کن فلم فیسٹیول میں

ایک سرحدی باڑ پر ٹانگ پر گولی لگنے کے باوجود اپنی منزل تک پہنچنے کی ایک غیرمعمولی تگ و دو کرنے والے مہاجر کی کہانی کن فلم فیسٹول میں پیش کی گئی۔

دنیا کے مشہور ترین فلمی میلوں میں سے ایک شمار ہونے والے کن فلم فیسٹیول میں اتوار کے روز ایک مہاجر کی منزل تک پہنچنے کی تگ و دو کی کہانی پر مبنی فلم کو ایک ایوارڈ بھی دیا  گیا۔ ہنگری سے تعلق رکھنے والے ڈائریکٹر کورنل مُنڈروچزو کی اس فلم میں یورپ کو درپیش مہاجرین کے بحران کا احوال پیش کیا گیا ہے۔ اس فلم کی کہانی ایک مہاجر سے متعلق ہے، جسے سرحدی باڑ کے قریب ٹانگ میں گولی لگنے کے بعد یہ احساس ہوتا ہے کہ وہ غیرمعمولی قوتوں کا حامل ہے۔

Berlinale 2010 Photocall Renn, wenn Du kannst (picture alliance/dpa)

یہ رنگا رنگ فلمی میلی فرانسیسی شہر کن میں منعقد ہوتا ہے

کن فلم فیسٹیول میں اس کے علاوہ ٹوڈ ہائنس کی فلم بھی نمائش کے لیے پیش کی گئی ، جس میں سن 1920 اور 1970 کے حلات کی عکاسی کی گئی ہے۔ اس فلم کے حوالے سے ناقدین کا کہنا ہے کہ ہائنس کی گزشتہ فلم ’کیرول‘ کے مقابلے میں یہ فلم کم معیاری ہے۔ ہائنس کی پچھلی فلم چھ شعبوں میں آسکر ایوارڈز کے لیے نامزد ہوئی تھی۔

اس فلم فیسٹیول میں اس کے علاوہ متعدد آسکر ایوارڈ یافتہ فلم ’دی آرٹسٹ‘ کے ہدایت کار مائیکل ہازانا ویسیوس اور دیگر اہم ہدایات کار اور فلمی ستارے بھی شریک ہوئے، جب کہ دنیا بھر سے کئی فلموں کا پریمیر بھی اس فلمی میلے کا حصہ تھا۔