1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

 این اے 120، اصل مقابلہ یاسمین راشد اور کلثوم نواز کے درمیان

پاکستان کےشہر لاہور میں ملک کے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی سپریم کورٹ کی جانب سے نااہلی کے بعد خالی ہونے والی نشست پر ضمنی الیکشن آج ہو رہا ہے۔ اس نشست کے لیے نواز شریف کی اہلیہ کلثوم نواز بھی مضبوط امیدوار ہیں۔

 ملکی عدالت عالیہ کی جانب سے اٹھائیس جولائی کو  نااہل قرار دیے جانے والے سابق وزیراعظم نواز شریف کی اہلیہ کلثوم نواز این اے 120 سے مسلم لیگ نون کی طرف سے الیکشن میں حصہ لے رہی ہیں۔ سڑسٹھ سالہ بیگم کلثوم نواز شریف آج کل گلے کے سرطان کے علاج کے لیے لندن میں ہیں۔ تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ ملک کے سب سے زیادہ آبادی والے صوبے پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں اتوار سترہ ستمبر کو ہونے والے ضمنی انتخاب کے نتائج  پاکستان کی سیاست پر گہرے اثرات مرتب کر سکتے ہیں۔

حکمران جماعت مسلم لیگ نون نے اپنی انتخابی مہم میں توجہ سپریم کورٹ کے اُس فیصلے پر مرکوز رکھی جس میں میاں محمد نواز شریف کو نااہل قرار دیا گیا تھا۔ مسلم لیگ نون نے انتخابی مہم کے دوران جلسوں میں لوگوں سے کہا کہ وہ معزول وزیر اعظم کی اہلیہ کو منتخب کر کے عدالتِ عالیہ کے فیصلے کو مسترد کر دیں۔

سن 2016 میں پاناما پیپرز کے منظر عام پر آنے کے بعد نواز شریف، اُن کے صاحبزادوں، بیٹی مریم اور اُن کے شوہر کیپٹن (ریٹائرڈ) صفدر سمیت مسلم لیگ نون کے رہنما اسحاق ڈار کے خلاف تحقیقات کا آغاز ہوا تھا اور اٹھائیس جولائی سن 2017 کو ملکی عدالت عظمیٰ نے نواز شریف کو نااہل قرار دے دیا۔

نواز شریف نے سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف نظر ثانی کی درخواست دی تھی جسے دو روز قبل ہی عدالت کی جانب سے مسترد کر دیا گیا تھا۔ ہمیشہ سے مسلم لیگ نون کا گڑھ رہنے والے این اے 120 کے حلقے میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں چوالیس امیدوار حصہ لے رہے ہیں تاہم تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اصل مقابلہ پاکستان تحریک انصاف کی امیدوار یاسمین راشد اور بیگم کلثوم نواز شریف کے درمیان ہے۔

DW.COM