1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

 ایران: کان حادثے میں ہلاکتوں کی تعداد 35 ہو گئی

ایران کے شمالی حصے میں کوئلے کی ایک کان میں ہونے والے دھماکے کے نتیجے میں ہلاکتوں کی تعداد بڑھ کر 35 تک پہنچ گئی ہے۔ محنت و روزگار کے ملکی وزیرعلی ربیع نے ان ہلاکتوں کی تصدیق کر دی ہے۔

وزیر برائے محنت و روزگارعلی ربیع نے آج جمعرات چار مئی کو اپنے بیان میں مزید بتایا کہ امدادی کارکنوں کے بقول کوئلے کی اس کان میں پھنسے افراد کے حوالے سے مزید کوئی امید باقی نہیں بچی ہے۔ رزمستان یورت نامی کان میں یہ دھماکا گزشتہ روز دو پہر میں ہوا۔ ایرانی میڈیا نے قبل ازیں بتایا تھا کہ کان میں 80 سے زائد افراد کئی سو میٹر کی گہرائی میں پھنسے ہوئے ہیں۔

ایرانی حکام کے مطابق آزاد شہر نامی قصبے کے قریب واقع اس کان میں دھماکے کے بعد گیس بھری ہوئی تھی جس کی وجہ سے امدادی کاموں میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور اس گیس سے متاثر ہونے والے دو درجن سے زائد امدادی کارکنوں کو بھی ہسپتال پہنچایا گیا۔

شمالی ایرانی صوبے گلستان کی حکومت نے اس حادثے پر تین دن کا سوگ منانے کا اعلان کیا ہے۔ اس موقع پر صدر حسن روحانی کی جانب سے جاری کردہ ایک حکم نامے کے مطابق حکومت پھنسے ہوئے افراد کو نکالنے کے لیے اپنے تمام ذرائع بروئے کار لائے گی۔

ایران سے ملنے والی دیگررپورٹوں میں بتایا گیا ہے کہ یہ دھماکا گزشتہ روز اُس وقت ہوا تھا، جب کان کنوں کی ایک شفٹ اپنا کام ختم کر رہی تھی اور اُس کی جگہ ایک نئی شفٹ اپنا کام شروع کر رہی تھی۔

'زمستان یورت‘ نامی اس کان میں پانچ سو سے زائد کان کن کام کرتے ہیں۔ اِرنا نیوز ایجنسی کے مطابق یہ کان آزاد شہر سے چَودہ کلومیٹر کے فاصلے پر ہے۔ ایرانی صوبے گلستان کی سرحدیں شمال میں ترکمانستان اور بحیرہٴ کیسپیئن سے ملتی ہیں۔