1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

ایران میں کھانا بنانے کے غیرملکی پروگرام بند

ایران کے سرکاری ٹی وی پر غیر ملکی کھانے بنانے کے شوز پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ حکام کے مطابق یہ فیصلہ ایرانی عوام کی غیر صحتمدانہ کھانوں کی جانب بڑھتی رغبت روکنے کے لیے کیا گیا ہے۔

default

میڈیا رپورٹوں کے مطابق قدامت پرستوں کے اصرار پر یہ قدم ایرانی کلچر پر مغربی ممالک کی اثر اندازی روکنے کے لیے اٹھایا گیا ہے۔

ایران کی ایک معتدل ویب سائٹ اور چند دیگر خبر رساں اداروں کی جانب سے دی گئی ایک رپورٹ کے مطابق ایران کے سرکاری براڈ کاسٹ ادارے کے نائب سربراہ علی درابی کے مطابق ’ تمام غیر ایرانی کھانے پکانے کی ترکیبیں بتانے والے پروگراموں پر پابندی عائد کر دی گئی ہے‘۔

Restaurants im Iran Flash-Galerie

یہ پابندی ایران میں فاسٹ فوڈ کلچر کو قابو کرنے کے لیے لگائی گئی ہے

ایرانی ٹی وی چینلز پر دن کے اوقات میں دکھائے جانے والے وہ کوکنگ شوز نہایت مقبول تھے جن میں مختلف ایرانی پکوانوں کے علاوہ غیر ملکی کھانوں کی ترکیبیں بھی سیکھائی جاتی تھیں۔

رپورٹ کے مطابق ایرانی عوام میں اطالوی، چینی اور بھارتی کھانے بے انتہا پسند کیے جاتے ہیں اور حکومت نے یہ قدم، معاشرے میں تیزی سے پروان چڑھتے فاسٹ فوڈ کلچر اور غیر صحتمدانہ کھانوں کی جانب رغبت سے روکنے کے لیے اٹھایا ہے۔

ایران میں پرائیویٹ ٹی وی چینلز پر پابندی عائد ہے، تاہم ایرانی گھروں کی چھتوں پر سیٹلائٹ ڈش انٹینا کی بھرمار نظر آتی ہے۔ ان سیٹلائٹس کے ذریعے درجنوں چینلز فارسی زبان میں دن بھر سیاسی اور تفریحی پروگرام پیش کرتے ہیں۔

رپورٹ: عنبرین فاطمہ

ادارت: افسر اعوان

DW.COM