1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ایران میں مبینہ خاتون امریکی جاسوس کی گرفتاری

ایرانی سرحدی محافظوں نے آذربائیجان سے ملحقہ سرحد کے پاس سے ایک مبینہ امریکی خاتون جاسوس کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

default

عراق اور ایران کے درمیان سرحدی دروازہ

نیم سرکای خبر رساں ادارے فارس نے سرحدی محافظ فورس کے نائب کمانڈر احمد گیراوند کے حوالے سے یہ رپورٹ جاری کی ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ مبینہ خاتون نے پہلے اپنی شناخت ایک امریکی شہری کے طور پر کرائی اور پھر اپنے آپ کو سوئٹزرلینڈ کا شہری قرار دیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ گرفتار شدہ خاتون نے اپنی شناخت کے حوالے سے کئی متضاد بیان دیے ہیں۔

UN Sicherheitsrat Iran No Flash

گزشتہ سال سلامتی کونسل نے ایران پر نئی پابندیاں عائد کی تھیں

احمد گیراوند کے بقول فی الحال اس خاتون کی اصل شہریت کے حوالے سے کچھ نہیں کہا جاسکتا ہے۔ قومی ریڈیو سٹیشن کو دیے گئے ایک انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ اس مبینہ جاسوس کو پانچ جنوری کو جولفا نامی سرحدی علاقے میں اس وقت حراست میں لیا گیا جب وہ وہاں تھانوں اور سرحدی محافظوں کی فلمبندی میں مصروف تھی۔ اثنا خبر رساں ادارے نے سرحدی فورس کے نائب کمانڈر کے حوالے سے بتایا ہے کہ،’’ گرفتار شدہ خاتون امریکیوں کے لئے ایرانی سرحدوں کی عکسبندی کے مشن پر مامور تھی۔‘‘

واضح رہے کہ اس خاتون کی گرفتاری سے متعلق خبریں گزشتہ کچھ دنوں سے گردش میں تھیں۔ خاتون کا تعارف 55 سالہ Hall Talayan کے طور پر کرایا جارہا ہے۔ حالیہ رپورٹوں میں خاتون کی عمر 34 سال بتائی جارہی ہے۔ واضح رہے کہ یہ خبر ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب واشنگٹن اور تہران کے درمیان تعلقات میں تناؤ بڑھ رہا ہے۔ ایران میں 1979ء کے انقلاب کے بعد سے دونوں ملکوں کے درمیان سفارتی تعلقات منقطع ہیں۔

No Flash Iran Atom Präsident Mahmud Ahmadinedschad

ایرانی صدر احمدی نژاد متعدد مواقع پر واضح کرچکے ہیں کہ تہران کا جوہری پروگرام پرامن مقاصد کے لئے ہے

تہران کے متنازعہ جوہری پروگرام کے سلسلے میں رواں ماہ ترکی میں اہم مذاکرات ہوں گے۔ ان مذاکرات میں مغربی ممالک اور ایران کے نمائندے آمنے سامنے بیٹھ کر جوہری تنازعے کا حل نکالنے کی کوشش کریں گے۔

یاد رہے کہ جولائی 2009ء میں بھی ایران نے عراق کی سرحد کے پاس تین مبینہ امریکی جاسوسوں کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔ ان میں سے ایک، Sarah Shourd کو پانچ لاکھ ڈالر کے عوض ضمانت پر رہا کردیا گیا تھا۔ سارہ کا کہنا تھا کہ وہ اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ہائیکنگ کر رہی تھیں کہ انجانے میں ایرانی سرحدی حدود میں داخل ہوگئی۔

رپورٹ : شادی خان سیف

ادارت : امتیاز احمد

DW.COM