1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ایران اور روس کے درمیان معاہدہ

روس اور ایران نے کل ایک معاہدے پر دستخط کیے ہیں جس کے تحت آئندہ سال بوشہر میں ایران کا پہلاایٹمی بجلی گھر کام کرنا شروع کر دے گا۔ روس کی ایٹمی انرجی کے ادارے کے چئیر مین سرگئی کریانکو نے گزشتہ روز ایران کی ایٹامک انرجی کے سربراہ غلام رضاآقا زادے سے بو شہر کے ایٹمی بجلی گھر کی تعمیر کے سلسلے میں بات چیت کی تھی جو روس کے زیر نگرانی تیار ہو رہا ہے۔سرگئی کریانکو کا کہنا ہے کہ یہ ایٹمی بجلی گھر ستمبر 2007 میں کام کرنا شروع

ایران کی ایٹامک انرجی کے سربراہ غلام رضا آقا زادہ

ایران کی ایٹامک انرجی کے سربراہ غلام رضا آقا زادہ

کرے گا لیکن اس کے لئے جوہری ایندھن 6 ماہ کے اندر اندر فراہم کیا جائے گا۔ایران س سے پہلے روس سے اس بات کی شکایت کر چکا ہے کہ اس نے بو شہر کے ایٹمی بجلی گھر کی تعمیر میں سستی رفتاری کا مظاہرہ کرنا شروع کر دیا ہے۔