1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

اٹلی: وینس فلم فیسٹول کا آغاز

اٹلی کے شہر وینس میں آج سے دنیا کا سب سے قدیم اور نامور فلمی میلہ شروع ہو رہا ہے۔ اِس بین الااقوامی فلمی میلے میں دنیا بھر میں ہر سال بننے والی بہترین فلمیں پیش کی جاتی ہیں۔

default

وینس سے منسلک لِی ڈو نامی جزیرے پر اس فلمی میلے کا انعقاد ہر سال اسی مہینے میں کیا جاتا ہے۔ وینس فلم فیسٹول گیارہ دن تک جاری رہتا ہے۔ دنیا بھر کی فلمی صنعتوں سے تعلق رکھنے والے مختلف فنکار اور تکنیکی ماہرین فوٹو شوٹ، پارٹیز اور فلموں کی نمائش کے لئے اِس میلے میں شرکت کرتے ہیں۔

Film Festival Venedig 2009 - Schauspielerin Svetlana Khodchenkova

روسی اداکارہ سویتلانہ خوجنکووا وینس میلے کی افتتاحی تقریب میں

وینس فلم فیسٹول کی انتظامیہ کے مطابق اِس سال ہالی وڈ کے بہت سے نامور اداکاروں کی شرکت بھی اس میلے میں متوقع ہے۔ ہالی وڈ کے متوقع اداکاروں میں میٹ ڈیمن، مائیکل مُور، نکولس کیج، جارج کلُونی، اولیور اسٹون، چارلیز تھیرون، ایوا مینڈس، رچرڈ گیر اور سلویسٹر اسٹالون شامل ہیں۔ ہالی وڈ کے مذکورہ اداکار اس میلے میں اپنی اپنی فلموں کی نمائش کے موقع پر اِن فلموں کے ہدایت کاروں کے ساتھ آڈیئنس اور ججز کے سوالات کے جوابات بھی دیں گے۔

فیسٹول آرگنائزرز نے اس میلے میں چار چاند لگانے اور اسے دوسرے بین الا قوامی میلوں سے منفرد بنانے کی غرض سے لی ڈو کے جزیرے پر موجود سنیما کمپلیکس کی آرائش و زیبائش کا کام بھی شروع کررکھا ہے۔ لی ڈو سنیما کمپلیکس کی آرائش پر 100 ملین یورو کے قریب لاگت آئے گی۔

Internationale Filmfestspiele von Venedig

افتتاحی فلم ’’باریا‘‘ کے اطالوی ہدایتکار جیزیپے ٹورناٹورے

وینس فلم فیسٹول کا آغاز اٹلی کے نامور ہدایت کار جیزیپے ٹورناٹورے کی نئی فلم Baaria سے کیا گیا۔ اِس فلم کی پروڈکشن پر 25 ملین یورو کی لاگت آئی ہے، جو کہ اٹلی کی فلمی صنعت کی تاریخ میں سب سے زیادہ مہنگی پرڈکشن ہے۔ گزشتہ بیس سال میں یہ پہلا موقع ہے جب اس عالمی فلمی میلے کا آغاز اٹلی میں تیار کی گئی ایک ہوم پروڈکشن سے کیا گیا ہے۔ اِس بار اِس میں جرمنی سے بھی متعدد فلموں کی نمائش کی جا رہی ہے۔

رپورٹ : انعام حسن

ادارت : عاطف توقیر

DW.COM