1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

انڈونیشیا: زلزلے میں اب تک 57 افراد ہلاک

انڈونیشیا کے صوبے جاوا میں زلزلے سے اب تک 57 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ 5000 افراد کے لاپتہ ہونے کی اطلاعات ہیں۔ امدادی کارکنان اور فلاحی تنظیموں کے اراکین اِس زلزلے سے متاثرہ افراد کی مدد کرنے میں مصروف ہیں۔

default

انڈونیشی حکام کے مطابق پولیس اور فوج کے دستوں کو بھی امدادی کاموں کے لئے طلب کرلیا گیا ہے۔ سرکاری اندازوں کے مطابق جاوا کی جنوبی ساحلی پٹی پر واقع تین اضلاع میں اِس زلزلے سے سب سے زیادہ نقصان ہوا ہے۔ ان اضلاع میں سیانجور، گارُت اور تاکسملایا شامل ہیں۔ انڈونیشیا میں کل سہ پہر جاوا اور اُس سے ملحقہ کئی دوسرے جزائر پر زلزلہ آیا تھا۔ ریکٹر اسکیل پر اِس زلزلے کی شدت 7.0 تک ریکارڈ کی گئی۔ وزارت صحت کے شعبہء قدرتی آفات کے ایک ترجمان رُستم پکایا کے مطابق درجنوں افراد ابھی تک ملبے کے نیچے دبے ہوئے ہیں، تاہم اُن کی زندگی بچانے کا کام تیزی سے جاری ہے۔ انڈونیشیا میں امدادی کاموں کی ایک غیر سرکاری تنظیم کے مطابق کارکنان کو زلزلے سے متاثرہ علاقوں میں امدادی کام کرنے میں شدید دشواری کا سامنا ہے۔ اِس دشواری کی وجہ جاوا کے وہ گھنے جنگلات ہیں، جہاں پر یہ مکان تعمیر کئے گئے تھے اور اب وہ ملبے کا ڈھیر بن چکے ہیں۔

Indonesien Erdbeben Katastrophe Zerstörung in Java

جاوا میں امدادی کام جاری ہے

اِسی امدادی تنظیم کے ایک ترجمان پریادی کارڈونو نے بتایا کہ امدادی کاموں کے لئے ابھی تک بھاری مشینیں موقع پر نہیں پہنچ پا رہیں اور لوگ جیسے تیسے ملبہ ہٹانے کی کوششیں کر رہے ہیں۔ پہاڑ کے بڑے بڑے ٹکڑوں اور گرے ہوئے درختوں کو ہٹانے کا کام جاری ہے۔ انہوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ ملبے تلے دبے زیادہ تر افراد شاید اب زندہ نہ بچ سکیں۔

انڈویشیا کی سرکاری نیوز ایجنسی کے مطابق ملکی صدر سوسیلو یودھویونو اور اُن کی کابینہ کے ارکان نے آج جاوا کا دورہ کیا اور وہاں پر جاری امدادی کاموں کا جائزہ لیا۔ جاوا کے ایک ہسپتال میں آج 45 زخمیوں کو لایا گیا، جن میں سے 43 کی حالت خطرے سے باہر ہے۔ تاہم ایک 43 سالہ عورت اور ایک سات سال کا بچہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگئے۔

اطلاعات کے مطابق انڈونیشیا کے دارلحکومت جکارتہ، بالی اور سُماٹرا میں بھی کل اِس زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے، جس کے بعد وہاں کے شہری اپنے گھروں اور دفاتر سے باہر نکل آئے۔ جکارتہ میں مچی اِس بھگدڑ میں ایک شہری ہلاک ہوگیا، تاہم وہاں زلزلے کی وجہ سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

آسٹریلوی وزیر اعظم کیون رَڈ نے پڑوسی ملک انڈونیشیا کو زلزلے کے متاثرین کے لئے امدادی پیکج کی پیشکش کی ہے، جبکہ مغربی جاوا کی صوبائی انتظامیہ نے متاثرین کے لئے 8.8 ملین ڈالر دینے کا اعلان کیا ہے۔

ایشیا کے مختلف ممالک بشمول انڈونیشیا میں 2004 ء میں زلزلے آنے سے سونامی نامی سمندری طوفان آیا تھا جس سے انڈونیشیا میں سب سے زیادہ تباہی پھیلی تھی۔ اس طوفان میں دو لاکھ افراد ہلاک ہوگئے تھے، جن میں سے ایک لاکھ 68 ہزار کا تعلق انڈونیشیا سے تھا۔ 2004 ء کے سونامی کے بعد انڈونیشیا میں 2006 ء میں ایک بار پھر ایک زلزلے کے نتیجے میں سونامی طوفان آیا، جس میں چھ سو کے قریب افراد ہلاک اور 74 لا پتہ ہوگئے تھے۔

رپورٹ: انعام حسن

ادارت: امجد علی