1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

انڈر ٹونٹی فٹ بال ورلڈ کپ: چیمپیئن گھانا

دنیا کے مقبول ترین کھیل فٹ بال کے انڈر ٹونٹی ورلڈ کپ ٹورنامنٹ کا اختتام گزشتہ روز ہو گیا ہے۔ افریقی ملک گھانا کی ٹیم نئی چیمپیئن بن کر ابھری ہے۔ انڈر ٹونٹی فٹ بال کا ورلڈ کپ ہر دو سال بعد منعقد کیا جاتا ہے۔

default

گھانا کے فٹ بال کھلاڑیوں کا گول کے بعد جوش اور ولولہ: فائل فوٹو

فٹ بال کے نگران ادارے فیفا کی نگرانی میں کھیلے گئے انڈر ٹونٹی ورلڈ کپ کا فائنل گزشتہ روز مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں کھیلا گیا۔ یہ میچ برازیل اور گھانہ کی ٹیموں کے درمیان کھیلا گیا۔ مقررہ وقت کے بعد اضافی وقت میں بھی کوئی ٹیم گول نہ کر سکی اور انجام کار تیسری پوزیشن کے میچ کی طرح یہ میچ بھی پنلٹی شارٹس کے مرحلے پر جا کر ختم ہوا۔

پنالٹی ککس پر گھانہ کی ٹیم نے غیر متوقع طور پر گولڈ میڈل حاصل کر لیا۔ برازیل کی جانب سے تین مسلسل گول کرنے کے بعد اگلی ککس پر انتہائی ناقص اور غیر معیاری شارٹس لگائی گئی۔ پانچویں شارٹ جو کہ میچ وننگ ہو سکتی تھی وہ برازیل کے کھلاڑیی نے بظاہر شدید دباؤ کاشکار ہوتے ہوئے باہر پھینک دی۔ ماہرین کے خیال میں برازیل کے لئے یہ میچ حقیقت میں وہیں ختم ہو گیا تھا۔ بعد چھٹی پنالٹی کک بھی برازیلی کھلاڑی کی کوئی زوردار یا مہارت کا نمونہ نہیں تھی۔ دوسری جانب پنالٹی ککس پر میچ برابر کرنے کے بعد گھانہ کے نوجوان فٹ بالر ایک نئے ولوے کے ساتھ سڈن ڈیتھ مرحلے میں داخل ہوئے اور میچ جیت گئے۔

U-20 World Cup

انڈر ٹونٹی ورلڈ کپ کے ایک میچ کا منظر: فائل فوٹو

ماہرین کا خیال ہے کہ مجموعی طور پر انڈر ٹونٹی کے ورلڈ کپ کے فائنل میں برازیلی نوجوان فٹ بالر اُس کھیل کا مظاہرہ نہیں کر سکے جس کی توقع کی جا رہی تھی۔ گھانہ کے نوجوان فٹ بالر کی ٹیم نے مسلسل دفاعی کھیل کا مظاہرہ کیا۔ اِس دوران برازیلی دفاع کی غلطیوں کا فائدہ اٹھاتے ہوئے برازیل کےگول پر افریقی ملک کی ٹیم نے حملے بھی کئے اور چھ کارنر بھی حاصل کئے۔ برازیل کی ٹیم سات کارنر حاصل کرنے میں کامیاب رہی۔ گھانہ کے ایک کھلاڑی ڈینئل آڈڈو کو غلط فاؤل پر ریفری نےسرخ کارڈ دکھا کر میچ سے باہر کردیا گیا تھا۔ گھانہ نے دس کھلاڑیوں سے مسلسل دفاع اور جارحیت کا ملا جلا مظاہرہ کرتے ہوئے فائنل جیت کر عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ گھانہ کی ٹیم تقریباً تراسی منٹ دس کھلاڑیوں کے ساتھ فائنل میچ کھیلتی رہی۔ دوسری جانب برازیل کے نوجوان فٹ بالر بڑے میچ کے دباؤ کا شکار دکھائی دے رہے تھے اور ٹیم میں تال میل کے ساتھ ساتھ حکمت عملی کا بھی فقدان تھا۔

اِس میچ کے علاوہ تیسری پوزیشن کا میچ بھی آج ہی کھیلا گیا۔ اِس میچ میں کوسٹا ریکا اور ہنگری کی ٹیموں کو بھی پنالٹی شارٹس پر پوزیشن کا فیصلہ کرنا پڑا۔ اضافی وقت کے ختم ہونے پر دونوں ٹیموں کے درمیان میچ ایک ایک گول سے برابر رہا۔ بعد میں ہنگری کی ٹیم نے دو پنالٹی ککس بمقابلہ صفر کے یہ میچ جیت لیا۔ کوسٹا ریکا کے گول کو ہنگری کے ولادی میر کومان نے برابر کیا جو ٹورنامنٹ کا 167واں گول تھا۔ یہ میچ بھی فائنل میچ کی طرح انتہائی تیز کھیل سے عاری تھاے مجموعی طور پر دفاعی حکمت عملی غالب تھی۔

دونوں میچوں کو شائقین کی ایک بڑی تعداد نے دیکھا۔ فائنل میچ میں میدان کے اندر حاضرین کی تعداد سڑسٹھ ہزار سے زائد تھی۔ فیفا کے سربراہ نے ٹورنامنٹ کے انعقاد پر انتظامی اور دوسری سہولیات کے حوالے سے اطمننان کا اظہار کیا ہے۔

فیفا کا انڈر ٹونٹی فٹ بال ورلڈ کپ ہر دوسال بعد منعقد کیا جاتا ہے۔ سن دو ہزارگیارہ کا انڈر ٹونٹی ورلڈ کپ کولمبیا میں کھیلا جائے گا۔