1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

انسداد بدعنوانی کے وزیر ’بدعنوانی‘ کی وجہ سے ہی مستعفٰی

برازیل میں صدر دلما روسیف کی مواخذے کی کوششیں کامیاب ہو چکی ہیں اور انہیں عارضی طور پر معطّل کیا جا چکا ہے۔ اسی دوران انسداد بدعنوانی کے وزیر کو ایک فون کال کے منظر عام پر آنے کے بعد اپنے عہدے سے ہاتھ دھونا پڑے ہیں۔

برازیل میں بدعنوانی کے خاتمے کے وزیر فابیانو سلویرا کی کچھ ریکارڈنگز منظرِ عام پر آئی تھیں، جن سے پتہ چلتا تھا کہ انہوں نے معدنی تیل کی ریاستی کمپنی پیٹروبراس سے متعلق کرپشن کے ایک بڑے اسکینڈل پر پردہ ڈالنے کی کوشش کی تھی۔ یہ ریکارڈنگز نشریاتی ادارے گلوبو نے جاری کی ہیں، جس میں فابیانو سلویرا سینیٹ کے سربراہ رینان کالہیریئوس کو بتا رہے کہ ہیں جاری تفتیشی عمل کے خلاف مزاحمت کس طرح کی جا سکتی ہے۔

اس کے علاوہ سلویرا کی ایک اور ریکارڈنگ بھی سامنے آئی ہے، جس میں وہ پیٹرو براس کے ایک ذیلی ادارے ٹرانسپیرٹو کے صدر سیرجیو ماخادو سے بھی بات کر رہے ہیں۔ اس دوران ان کو یہ کہتے ہوئے سنا جا سکتا ہے،’’رستے ہوئے خون کو روکنے کے لیے حکومت کی تبدیلی ضروری ہے۔‘‘ ناقدین کا کہنا ہے کہ یہاں ان کی مراد جاری تفتیشی عمل سے ہے۔ ماخادو اور کالہیریئوس سے بھی بدعنوانی کے معاملات میں تفتیش کی جا رہی ہے۔

برازیل میں بارہ مئی کو دلما روسیف کو چھ ماہ کے لیے ان کے عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔ روسیف کی معطّلی کے بعد اقتدار مشیل تیمر کو سونپا گیا ہے۔ عبوری صدر تیمر نے ابھی حال ہی میں فابیانو سلویرا کو ملک میں بدعنوانی کے خاتمے کی وزارت کا قلمدان سونپا تھا۔ دو ہفتوں سے قائم نئی حکومت میں وہ اپنے عہدے سے مستعفی ہونے والے دوسرے وزیر ہیں۔ گزشتہ ہفتے پلاننگ کے وزیر ’رومیرو جوکا‘ کو بھی اسی طرح کی ریکارڈنگ کے باعث اپنا عہدہ چھوڑنا پڑا تھا۔