1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

’امید ہے آپ کا چال چلن درست ہو گا‘، نئے سال کا پیغام

بھارت میں خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے یا انہیں ستانے والے چھ لاکھ مردوں کو پولیس کی طرف سے نئے سال کے موقع پر ایک ایس ایم ایس پیغام بھیجا جا رہا ہے۔ اس پیغام کا مقصد انہیں یہ بتانا ہے کہ وہ پولیس کی نظروں میں ہیں۔

جرمن خبر رساں ادارے ڈی پی اے کے مطابق اُتر پردیش کی پولیس کی طرف سے بھیجے جانے والے پیغام کا متن ہے، ’’آپ اور آپ کا فون ابھی تک پولیس کی نگرانی میں ہے۔ امید ہے آپ کا چال چلن اب درست ہو گا۔ ہماری طرف سے خوشیوں بھرے نئے سال کے لیے نیک تمنائیں۔‘‘

یہ پیغام ’خواتین کو ستانے والوں‘ یا Eve-teasers کو جمعرات 31 دسمبر کو بھیجا جائے گا۔ جنوبی ایشیا میں یہ اصطلاح خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے والوں کے لیے استعمال کی جاتی ہے۔

اترپردیش پولیس کے سینیئر افسر ناونیت سیکیرا کے مطابق، ’’خواتین کو ستانے والوں یا بیہودہ کالیں کرنے والے افراد کو یہ پیغام بھیجنے کا مقصد انہیں یہ یاد دلانا ہے کہ ان کا ریکارڈ پولیس کے پاس موجود ہے۔ یہ ایک طرح سے احتیاطی اقدام ہے۔ ہم انہیں بتانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ ان کی طرف سے خواتین کو ہراساں کرنے یا ان کے لیے مشکلات پیدا کرنے کی کسی کوشش کا فوری اور سخت ردعمل سامنے آئے گا۔‘‘

خواتین کو ستانے والوں یا بیہودہ کالیں کرنے والے افراد کو یہ پیغام بھیجنے کا مقصد انہیں یہ یاد دلانا ہے کہ ان کا ریکارڈ پولیس کے پاس موجود ہے

خواتین کو ستانے والوں یا بیہودہ کالیں کرنے والے افراد کو یہ پیغام بھیجنے کا مقصد انہیں یہ یاد دلانا ہے کہ ان کا ریکارڈ پولیس کے پاس موجود ہے

اترپردیش میں پولیس کی جانب سے خواتین کے لیے قائم کی گئی ٹیلیفون ہیلپ لائن کی سربرالہی بھی سیکیرا کے سپرد کی گئی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ پانچ لاکھ ایسی خواتین کو بھی ایس ایم ایس پیغام بھیجا جائے گا جنہوں نے ہراساں کیے جانے کے خلاف شکایات کی ہیں۔ انہیں پیغام بھیجنے کا مقصد یہ یقین دلانا ہے کہ بوقت ضرورت پولیس ان کی مدد کرنے کو ہر وقت موجود ہے۔‘‘

اُتر پردیش بھارت کا سب سے گنجان آبادی والا صوبہ ہے جہاں ملک کی 1.2بلین کُل آبادی میں سے 200 ملین آباد ہیں۔ بھارت میں خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کیے جانا ایک بڑا مسئلہ ہے اور ملک میں ہونے والے مختلف تہواروں اور نئے سال کی تقریبات کے دوران اس طرح کے واقعات عام طور پر دیکھے جاتے ہیں۔